چوک یادگار پولیس چوکی انچارج آپے سے باہر ہو گیا کاسنا ر پر تشدد

چوک یادگار پولیس چوکی انچارج آپے سے باہر ہو گیا کاسنا ر پر تشدد

پشاور(کرائمز رپورٹر) چوک یاد گار چوکی انچارج کی بداخلاقی کی ایک اور ویڈیو منظر عام پر آگئی ،مزکورہ محافظ نے گھریلو تنازعے کے مقدمے کی بناء پر سنار کی دکان پر چھاپہ مارتے ہوئے سید ارشد علی نامی نوجوان اور مہمان کو دکان سے دھکے مار کر نکالا اور بعد ازاں چوکی لے جاکر اس پر تشدد بھی کیااور حوالات میں بند کردیا۔ چوکی کے انچارج امتیاز کی بداخلاقی پر مبنی یہ پہلی ویڈیو نہیں، اس سے قبل سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیو میں مزکورہ چوکی انچارج احتجاج کرنے والے تاجروں کو گالیاں اور دھمکیا ں دیتے ہوئے سنائی دے رہا تھا، شہری و سماجی حلقے ایسی صورتحال پر صوبائی حکومت اور آئی جی پولیس کی خاموشی پر تشویش کا اظہار کررہے ہیں ، صوبائی دارالحکومت پشاور کے اندرون شہر میں پولیس گردی کی یہ کوئی پہلی مثال نہیں جبکہ دوسری جانب شہری حلقوں میں یہ رائے بھی پختہ ہو رہی ہے کہ پولیس کے اعلیٰ افسران کی جانب سے سٹی سرکل کے تھانوں میں عوام دوست اور شریف اہلکاروں، ایس ایچ اوز ،چوکی انچارج تعینات کرنے کی بجائے بھاری بھتہ وصولی کرنے والوں کو ہی ترجیح دی جارہی ہے کیونکہ ویڈیو ز منظر عام پرآنے کے باوجود پولیس کے اعلیٰ افسران کی پراسرار خاموشی سوالیہ نشان بنی ہوئی ہے؟ اس سلسلے میں گولڈ سمتھ زرگر ایسوسی ایشن کے صدر اور دیگر تاجروں نے وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک انسپکٹر جنرل آف پولیس صلاح الدین اور سی سی پی او محمد طاہر خان سے مطالبہ کیا ہے کہ فوری طور پر چوک یاد گار چوکی انچارج امتیاز کو معطل کرکے شہری و عوام دوست ایماندار پولیس افسر کو تعینات کیا جائے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر