قائداعظم یونیورسٹی کی بلوچ سٹوڈنٹس کونسل کا طلباء کی بحالی تک احتجاج جاری رکھنے کا اعلان

قائداعظم یونیورسٹی کی بلوچ سٹوڈنٹس کونسل کا طلباء کی بحالی تک احتجاج جاری ...

اسلام آباد ( آئی این پی )قائداعظم یونیورسٹی کی بلوچ سٹوڈنٹس کونسل نے طلباء کی بحالی تک احتجاج جاری رکھنے کا اعلان کر دیا ، بلوچ سٹوڈنٹس کونسل کے چیئرمین کامران بلوچ نے کہا ہے کہ یونیورسٹی انتظامیہ دھڑوں میں بٹی ہوئی ہے ، وائس چانسلر کبھی ایک لابی کے ساتھ کھڑے ہوتے ہیں کبھی دوسری لابی کے ساتھ کھڑے ہوتے ہیں ،اکیڈمک سٹاف ایسوسی ایشن والے چاہتے ہیں ہڑتال جاری رہے وہ وائس چانسلر سے استعفی مانگ رہے ہیں ، وہ اپنے ذاتی مقاصد کو کامیاب کرنے کے لئے ہمیں کیوں ذلیل کر رہے ہیں ،20مئی کو قائداعظم یونیورسٹی میں پیش آنے والا واقعہ انتظامیہ کی دانستہ غفلت کے بغیر پیش آ ہی نہیں سکتا تھا ، وائس چانسلر صاحب سو رہے ہیں ایچ ای سی کے چیئر مین ہمیں دھمکیاں دے کر جا رہے ہیں ، ہم لوگ پچھلے 20دنوں سے ذلیل ہو رہے ہیں ، ہم ظلم و زیادتی برداشت نہیں کر سکتے، ہم اپنے موقف پر قائم ہیں بلوچ طلبا ء اپنے طور پر طلباء کی بحالی تک اپنا پر امن احتجاج جاری رکھیں گے توار کو نیشنل پریس کلب اسلا م آبا د میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کامران بلوچ نے کہا کہ جس روز مذاکرات ہوئے تھے اس وقت ہم سے دو تین وعدے کیے گئے تھے،کہ آپ کو سینڈیکیٹ میں پیش ہو کر اپنا موقف بیان کرنے کا موقع دیا جائے گا ہمیں اسلام آبا دہوٹل تو بلایا گیا مگر ہمیں سینڈیکیٹ میں نہیں جانے دیا گیا کامران بلوچ نے کہا کہ ایسی کون سی سازشیں ہیں جس نے ہمیں اس مقام تک لا کھڑا کیا ہے ہمیں دھمکیاں دی جا رہی ہیں مگر ہم نے دھمکیوں کا بھی خیر مقدم کیا ہے ہم توڑ پھوڑ کی طرف نہیں جائیں گے انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی انتظامیہ دھڑوں میں بٹی ہوئی ہے ، وائس چانسلر کبھی ایک لابی کے ساتھ کھڑے ہوتے ہیں کبھی دوسری لابی کے ساتھ کھڑے ہوتے ہیں ،اکیڈمک سٹاف ایسوسی ایشن والے چاہتے ہیں ہڑتال جاری رہے وہ وائس چانسلر سے استعفی مانگ رہے ہیں ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر