تبدیلی کے ذمہ دار حکومتی و جے یو آئی اراکین پارلیمنٹ ہیں‘باز محمد خان

تبدیلی کے ذمہ دار حکومتی و جے یو آئی اراکین پارلیمنٹ ہیں‘باز محمد خان

پشاور ( کرائمز رپورٹر) عوامی نیشنل پارٹی کے سینیٹر حاجی باز محمد خان ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ حکومتی و جے یو آئی کے اراکین الیکشن بل میں حلف نامہ تبدیل کرنے کے مرتکب ہیں قانون سازی کیلئے بل کمیٹی ،قومی اسمبلی اور کابینہ میں پاس کرنے کے بعد منظوری کیلئے سینیٹ میں لایا جا تا ہے ان تمام مراحل سے گزر کر جے یو آئی نے اس کی نہ صرف حمایت کی بلکہ بلوچستان سے تعلق رکھنے والے جے یو آئی کے وزیر ڈاکخانہ جات نے باقاعدہ تقریرکی کہ الیکشن بل کے حلف نامے میں کوئی بھی ایسالفظ نہیں جس سے توہین رسالت ہو اْنہوں نے کہا کہ مذکورہ بل میں انتخابی مہم چلانے ،الیکشن فارم پْر کرنے ،پولنگ کے اندرونی و بیرونی فرائض ،حلف لینے سمیت متعدد نکات شامل ہیں جس میں حلف نامہ متنازعہ بن گیا اور اس متنازعہ نقطہ کو پاس کرانے میں دوسروں پر الزامات لگانے والے خود ملوث ہیں جنہوں نے چار مراحل میں اسے پاس کیا اْنہوں نے کہا کہ مذکورہ الیکشن بل قانون سازی کیلئے پہلے کمیٹی کے سامنے پیش کیا گیا جس میں جے یو آئی سمیت حکومتی و مذہبی جماعتوں کے اراکین ہیں وہاں سے پاس کیا گیا تو کابینہ بعد ازاں قومی اسمبلی لایا گیا وہاں بھی ان کے وزراء اور ممبران نے اس کی حمایت کی اور آخر میں سینیٹ میں لا کر ہم سے 37/38سے پاس کرایا گیا پاکستان تحریک انصاف نے بھی اس کی مخالفت میں ہماری حمایت کی تھی مگر منظوری کے وقت ان کے دو سینیٹر حاضر نہیں ہوئے جس کی وجہ سے پاس کیا گیا اگر دونوں موجود ہوتے تو بل پاس نہیں کیا جا سکتا تھا اْنہوں نے کہا کہ عوام کو ورغلانے والے جلسوں میں اپنی بے گناہی اور ملوث نہ ہونے کی تسلی نہ دیا کریں ہم اس کی حقیقت عوام کے سامنے لا رہے ہیں جس کے بعد دودھ کا دودھ پانی کا پانی ہو جائے گا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر