ٹوپی‘ چکن گونیا سمیت وبائی امراض کی لپیٹ میں

ٹوپی‘ چکن گونیا سمیت وبائی امراض کی لپیٹ میں

ٹوپی (نامہ نگار)تحصیل ٹوپی میں چکن گونیا ں اور ڈینگی کے ساتھ ساتھ نزلہ،زکام ، کانسی ،ہیپاٹائٹس اور دیگر بیماریاں عروج پر ہے پرائیویٹ کلینکس اور ہسپتالیں مریضوں سے بھر گئے عطائی ڈاکٹروں اور دو نمبرادویات کے بھی بھر مار ہے چیک اینڈ بیلنس کا کوئی نظام نہیں محکمہ صحت سے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کا مطالبہ عوامی حلقے تفصیل کے مطابق ملک کے دوسرے حصوں کی طرح تحصیل ٹوپی بھی شدید خشک سالی کی لپیٹ میں ہے علاقہ میں چکن گونیاں اور ڈینگی کے ساتھ ساتھ ہیپاٹائٹس بی اور سی، نزلہ ، زکام ، کانسی ، سینہ کی بیماری اور ایسی دوسری بیماریاں عروج پر ہے ایسا گھر شاذو نادر ملے گا جہاں کوئی مریض نہ ہو پرائیویٹ ڈاکٹروں کی کلینکس اور ہسپتالوں پر مریضوں کا رش بڑھ گیا ہے جہاں گھنٹوں گھنٹوں اپنے باری کیلئے انتظار کر نا پڑتا ہے دوسری طرف علاقہ میں عطائی ڈاکٹروں کے بھی خوب وارے نیارے ہیں غیر مستند ڈاکٹر غریب اور نادار لوگوں کو دونوں ہاتھوں سے لوٹ رہے ہیں دوائیوں کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ اور کئی دوائیوں کی خود ساختہ شارٹیج کی وجہ سے مارکیٹ میں دو نمبر اور غیر معیاری دوائیوں کی بھر مار ہے اکثر اوقات نقلی دوائی اصلی دوائی کے پیکٹ میں اور یا کہ اس دوائی اور اس کا فارمولہ ایک ہے کہ نام پر کھلے عام مہنگے داموں فروخت ہو ر ہی ہے صوبائی حکومت نے بھی زبانی کلامی داؤں پر صوبہ سے جنت بنا رکھا ہے جبکہ حقیقت یہ ہے کہ ہسپتالوں میں ڈسپرین اور پیرا سٹامول کے گولیوں کے سوا اور کچھ نہیں عوام علاقہ نے صوبائی وزیر صحت اور محکمہ صحت سے پوری اقدامات کا مطالبہ کیا ہے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...