عدالت نے نئی روایات قائم نہیں کیں،درخواستگزار کے مقدمے سے بڑھ کر عمران خان سے حساب لیا ،چیف جسٹس

عدالت نے نئی روایات قائم نہیں کیں،درخواستگزار کے مقدمے سے بڑھ کر عمران خان ...
 عدالت نے نئی روایات قائم نہیں کیں،درخواستگزار کے مقدمے سے بڑھ کر عمران خان سے حساب لیا ،چیف جسٹس

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)عمران خان اورجہانگیرترین نااہلی کیس کی سماعت دوران چیف جسٹس ثاقب نثارنے ریمارکس دیئے ہیں کہ درخواست گزار کے مقدمے سے بڑھ کرعمران خان سے حساب لیا ہے،یہ الگ بات ہے کہ عمران خان حساب دے پائے ہیں یانہیں،چیف جسٹس سپریم کورٹ کا کہنا تھا کہ کوشش ہوتی ہے سیاسی سوالات سے گریزکیاجائے ،سیاسی مقدمات میں نقصان عدالت کاہوتا ہے،ان کا کہنا تھا کہ جب تک ہمارااطمینان نہ ہو انصاف کیسے کرسکتے ہیں؟چیف جسٹس نے کہا کہ جب معاملہ کرپشن اوربے ایمانی کا ہوا، تب مقدمات کوسنا۔

حنیف عباسی کے وکیل اکرم شیخ کا کہنا تھا کہ عمران خان کیس مکمل ہوچکاتھا، عدالت نئے معیارقائم نہیں کرسکتی، عمران خان کے 7تحریری جوابات کے بعدموقف تبدیلی کایہ آٹھواں جواب ہے،عمران خان کے پہلے جواب میں فلیٹ مارگیج کاذکرنہیں۔

اس پر چیف جسٹس نے کہا کہ عدالت نے نئی روایات قائم نہیں کیں،مقدمے کواپنے لئے کھلاچھوڑاتھا، عدالت نے نعیم بخاری کودستاویز لانے کاکہاتھااورانہوں نے اپنے موقف سے متعلق مزید وضاحت کی ہے۔

عدالت نے آپ کے مقدمے سے بڑھ کرعمران خان سے حساب لیا ہے،یہ الگ بات ہے عمران خان حساب دے پائے ہیں یانہیں،جب تک ہمارااطمینان نہ ہو انصاف کیسے کرسکتے ہیں؟۔

اکرم شیخ کا کہنا تھا کہ تاثریہ ہے کہ اس مقدمے کو پاناماکی طرح نہیں سناگیا۔

جس پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ پاناماکے ساتھ مقدمے کو سننے کاوقت گزرگیا۔

مزید پڑھیں:۔ن لیگ کے معاملے میں سپریم کورٹ تحمل کا مظاہرہ کر رہی ہے، عمران خان کا کیس ختم ، لیگی وکیل مقدمہ طویل کر رہے ہیں: فواد چوہدری

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں