چین کی وہ چیز جو دیکھتے دیکھتے سائنسدانوں کی نظروں کے سامنے غائب ہونے لگی، کیا چیز ہے؟ پاکستان کے لئے بھی بڑا خطرہ پیدا ہوگیا

چین کی وہ چیز جو دیکھتے دیکھتے سائنسدانوں کی نظروں کے سامنے غائب ہونے لگی، ...
چین کی وہ چیز جو دیکھتے دیکھتے سائنسدانوں کی نظروں کے سامنے غائب ہونے لگی، کیا چیز ہے؟ پاکستان کے لئے بھی بڑا خطرہ پیدا ہوگیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

بیجنگ (مانیٹرنگ ڈیسک)گلوبل وارمنگ سے دنیا کو شدید خطرات لاحق ہو چکے ہیں۔ عالمی درجہ حرارت میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے اورباقی دنیا کے ساتھ ساتھ چین کے گلیشیئرز بھی تیزی سے غائب ہوتے جا رہے ہیں، اور یہ پاکستان کے لیے بھی سنگین خطرے کی گھنٹی ہے۔ امریکی نیشنل پبلک ریڈیو کی رپورٹ کے مطابق چین کے علاقے سنکیانگ میں واقع گلیشیئرز اس تیزی سے پگھل رہے ہیں کہ گزشتہ 20سالوں میں ان کی برف انتہائی کم ہو چکی ہے۔چائنیز اکیڈمی آف سائنسز کے ژن جیانگ کے گلیشیئرز پر نظر رکھنے والے تیان شین ماﺅنٹینز گلیشیولوجیکل سٹیشن کے سربراہ لی ژونگ چن کا کہنا ہے کہ ”آج سے 20سال پہلے میں جب نوجوان سائنسدان تھا تب اس خطے کے دو بڑے گلیشیئرز آپس میں ملے ہوئے تھے۔ اب ان کی برف پگھل جانے کے باعث یہ ایک دوسرے سے بہت دور ہو گئے ہیں۔“

’اس آدمی سے ملنا بھی جرم ہے‘ چین نے پوری دنیا کے حکمرانوں کو وارننگ جاری کردی، یہ آدمی کون ہے؟ جان کر آپ کو بھی بے حد حیرت ہوگی

لی ژونگ چن کا کہنا تھا کہ ”یہ گلیشیئرز اس تیزی سے پگھل رہے ہیں کہ اب انہیں محفوظ کرنا ممکن نہیں رہا۔ہم ہر مہینے ان کی برف چیک کرنے کے لیے یہاں آتے ہیں اور کئی سالوں سے مشاہدہ کر رہے ہیں کہ ان کی برف اس تیزی سے ختم ہو رہی ہے کہ ہر سال اس کی تہہ کی موٹائی15فٹ تک کم ہوتی جا رہی ہے۔“ رپورٹ کے مطابق سنکیانگ چین کا بہت بڑا خطہ ہے جو امریکی ریاست کیلیفورنیا سے چار گنا بڑا ہے۔ یہاں 20ہزار گلیشیئرز ہیں۔ 1950ءسے اب تک ان کی برف میں 21سے 27فیصد کمی واقع ہو چکی ہے اور اب اس کے پگھلنے کی شرح خطرناک حد تک تیز ہو چکی ہے۔

مزید : بین الاقوامی