ای سی ایل میں نام شامل کرنے یا نکالنے کی پالیسی، وفاقی حکومت اور مدعا علیہان سے جواب طلب

ای سی ایل میں نام شامل کرنے یا نکالنے کی پالیسی، وفاقی حکومت اور مدعا علیہان ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد کریم نے ای سی ایل میں نام شامل کرنے اور نکالنے کی پالیسی کے خلاف دائردرخواست پر وفاقی حکومت سیکرٹری داخلہ اور مدعاعلیہان سے2 ہفتوں میں جواب طلب کر لیا ہے۔درخواست میں وفاقی حکومت، وزیراعظم، وزیر داخلہ اور چیئرمین نیب سمیت دیگر کو فریق بنایا گیا ہے۔درخواست گزار کا موقف ہے کہ کسی شہری کا نام ای سی ایل میں شامل کرنے یا نکالنے کا فیصلہ وفاقی کابینہ کرتی ہے جبکہ قانون کے مطابق یہ اختیار سیکرٹری داخلہ کاہے، وزارت داخلہ کی جانب سے عدالتی حکم پر نہ تو بر وقت نام ای سی ایل میں شامل کیاجاتا ہے اور نہ نکالا جاتا ہے۔درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ ای سی ایل سے متعلق موجودہ پالیسی کو کالعدم کرکے سیکرٹری داخلہ کے اس اختیار پر عمل درآمد کی ہدایت جاری کی جائے۔

ای سی ایل

مزید : صفحہ آخر /رائے