انٹر ویوز کے باوجود نشتر ہسپتال میں ایم ایس کی سیٹ بدستور خالی‘ مسائل میں اضافہ

انٹر ویوز کے باوجود نشتر ہسپتال میں ایم ایس کی سیٹ بدستور خالی‘ مسائل میں ...

ملتان ( خبر نگار خصوصی)نشتر ہسپتال میں تین ہفتے گزرنے کے باوجود مستقل ایم ایس تعینات نہیں کیا گیا۔ محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ (بقیہ نمبر30صفحہ12پر )

کےئر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن پنجاب نے 2 اکتوبر 2018ء کو مستقل ایم ایس کی تعیناتی کیلئے انٹرویوز لئے تھے جبکہ ایم ایس کی آسامی ڈاکٹرعبدالرحمن قریشی کی معطلی کے بعد سے خالی ہے۔ انہیں 7 جولائی 2018ء کو بدعنوانی کے الزام کے تحت معطل کیا گیا تھا اور تقریباً 4 ماہ سے مستقل ایم ایس نہیں ہے اور 2 اکتوبر 2016ء کو چلڈرن کمپلیکس کے ایم ایس ڈاکٹر مظہرالخالق، سابق ایم ایس نشترہسپتال ڈاکٹرعاشق حسین ملک، ڈائریکٹرہیلتھ سروسز ملتان ڈویزن ڈاکٹرشاہد بخاری سمیت دیگر امیدواروں نے مستقل ایم ایس کیلئے انٹرویوز دیے تھے۔ نشترہسپتال کے قائم مقام ایم ایس ڈاکٹرعبدالحفیظ بھی 31 اکتوبر 2018ء کو مدت ملازمت پوری ہونے پر ریٹائرڈ ہو رہے ہیں۔ نشتر انتظامیہ کے مطابق مستقل ایم ایس کی تعیناتی کیلئے کوششیں کی جا رہی ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر