تیمرگرہ ،گورنمنٹ کنٹریکٹرز عدم ادائیگی پر سراپا احتجاج

تیمرگرہ ،گورنمنٹ کنٹریکٹرز عدم ادائیگی پر سراپا احتجاج

تیمرگرہ ( بیورورپورٹ )بقا یاجات کی عدم ادائیگی اور ترقیاتی کا موں کے لئے فنڈز ریلز نہ کرنے پر لوئر دیر کے گورنمنٹ کنٹریکٹرزسراپا احتجاج بن کرسڑکوں پر نکل آئے اور احتجاجی مظاہرکیا ٹھیکہ داروں نے بازووں پر سیاہ پٹیاں باندھ کر کتبے اٹھا رکھے تھے سوات ، مردان اور نوشہرہ کو ترقیاتی منصوبوں کے لئے فنڈز جاری کر ے جبکہ لوئر دیر کو یکسر نظر انداز کر دیا گیا لویر دیر کے ٹھیکہ داروں نے ڈیڈ لائن دیتے ہوئے خبردارکیا کہ اگر 30اکتوبر تک ان کے 3ارب 87کروڑکے بقایاجات کی ادائیگی نہ کی گئی تو نہ صرف جاری ترقیاتی کاموں پر کام بند کرینگے بلکہ نئے ترقیاتی کاموں کے ٹینڈروں کا بھی بائیکا ٹ کرینگے ان خیا لات کا اظہار لویر دیر کے گورنمنٹ کنٹریکٹرز کے رہنماؤں اخونزادہ نصیب اللہ ، صا حب زادہ سیف الاعظم ، حاجی محمد شاہ، بہادر زیب خان ، محمد ایوب خان ، دلاور خان ،اور ظاہر شاہ نے احتجاجی مظاہرہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا انھوں نے کہا کہ 2014 میں لویر دیر میں 5ارب 43روپے کے ترقیاتی منصوبوں کے ٹینڈر ہوچکے ہیں جس میں اب تک صرف اُنہیں ایک ارب 55کروڑ کی ادائیگی ہوچکی ہے جبکہ ان کے 3ارب 87کروڑ روپے بقا یا جات ہے اور جون تک ترقیاتی اسکیموں کی تکمیل کے لئے انہیں مذکورہ واجبات کی ادائیگی ہونا چاہئے انھوں نے کہا کہ صوبائی حکومت نے ترقیاتی منصوبوں کے لئے سوات کو 98کروڑ، مردان کو 93کروڑ، اور نوشہرہ کو 38کروڑروپے کی ادائیگی کی ہے جبکہ اس حوالے سے ضلع دیر لویر کو مکمل طور پر نظر انداز کرکے حکومت ان کے ساتھ سوتیلی ماں کا سلوک کررہی ہے انھوں نے دھمکی دی کہ اگر 30اکتوبر تک انہیں بقا یا جات کی ادائیگی نہ کی گئی تو نہ صرف وہ جاری ترقیاتی منصوبوں سے اپنا ساز وسامان سمیٹ کر کام بند کریں گے بلکہ نئے ٹینڈروں سے بھی بائیکاٹ کرنے پر مجبور ہونگے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر