رستم ،کھلی کچہری کے دوران احکامات کی دھجیاں

رستم ،کھلی کچہری کے دوران احکامات کی دھجیاں

رستم(تحصیل رپورٹر) تھانہ رستم میں کھلی کچہری کے دوران ڈی ایس پی رورل کی جانب سے شیردرہ میں ہوائی فائرنگ کی روک تھام کے احکامات ہوا میں اُڑ گئے،مردان اور صوابی کے درمیان پہاڑی علاقہ شیر درہ میں بدستور ہوائی فائرنگ سے سیاح آج بھی شدید پریشان ہیں عوام پورے ہفتے میں دو تین گھنٹے سیر و تفریخ کیلئے نکالتے ہیں جو ان کے لئے انتہائی اذیت میں تبدیل ہوجاتے ہیں بے دریغ ہوائی فائرنگ سے پہاڑوں میں آواز گونجنے سے بچوں کے ساتھ بڑے بھی ڈر محسوس کرتے ہیں تھانہ پرمولو ضلع صوابی اور تھانہ رستم ضلع مردان کا انتظامیہ لمبے تھان سوکر خاموش تماشائی کا کردار ادا کررہے ہیں ہوائی فائرنگ کے دوران آندھی گولی کا نشانہ بننے سے اگرکسی بے گناہ انسان کی جان چلی جائے تو اس کی ذمہ دار ی مقامی انتظامیہ پر عائد ہوگی،عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ شروع میں نوجوانوں کی بڑی تعداد یہاں پر تفریح اور سکون کے لئے آتے تھے لیکن ہوائی فائرنگ کی بوچھاڑ سے لوگ یہاں دوبارہ آنے کا رُح نہیں کرتے سدھوم رستم کے سماجی ، سیاسی اور عوامی حلقوں نے ڈی آئی جی مردان،ڈی پی او زصوابی و مردان سے پرزور مطالبہ کیا کہ ان سماج دشمن عناصر کے خلاف سخت سے سخت کاروائی کی جائے تاکہ آئندہ کوئی بھی فرد عوامی اور سیر و تفریخ کے جگہوں میں ہوائی فائرنگ کا سوچ بھی نہیں سکے۔۔۔

مزید : پشاورصفحہ آخر