مسلم لیگ( ن) کاپنجاب اسمبلی اجلاس کا بائیکاٹ، سیڑھیوں پر دھرنا،حکومت مخالف نعرہ بازی

مسلم لیگ( ن) کاپنجاب اسمبلی اجلاس کا بائیکاٹ، سیڑھیوں پر دھرنا،حکومت مخالف ...

لاہور (نمائندہ خصوصی) مسلم لیگ( ن) کے اراکین پنجاب اسمبلی کا اجلاس کی کارروائی کابائیکاٹ جاریا۔تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ(ن) کے ارکان اسمبلی گزشتہ روز بازوؤں پر سیاہ پٹیاں باندھ کر پنجاب اسمبلی کی سیڑھیوں پر اکھٹے ہوگئے جہاں انہوں نے دھرنا دیتے ہوئے صوبائی حکومت کیخلاف شدید نعرہ بازی کی ۔احتجاجی اراکین کا مطالبہ تھا کہ مسلم لیگ ن کے جن 6 اراکین کی رکنیت معطل کی گئی ہے انہیں بحال کیا جائے اور اگر حکومت نے ایسا نہ کیا تو پھر ان کا احتجاج جاری رہے گا ۔اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ نیازی صاحب نے اپنے بیان میں کہا کہ اپوزیشن میں مجرم بیٹھے ہیں جبکہ بیوروکریسی اور پولیس کام خراب کررہی ہے،درحقیقت نیازی صاحب کی کابینہ میں کرپٹ لوگ بیٹھے ہیں۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم سے ایک کروڑ نوکریوں کا وعدہ پورانہیں ہو رہا لہٰذا روزگار نہ چھینیں ۔انہوں نے کہا کہ پرویز الٰہی شاہ سے زیادہ شاہ کے وفادار بن رہے ہیں ،ہمارے چھ ارکان کو پولیس اسمبلی کے اندر نہیں آنے دے رہی حالانکہ معطل اراکین ایوان میں نہیں جا سکتے جبکہ سپیکر کی رولنگ سے پہلے کمیٹی انکوائری ہوتی ہے مگر یکطرفہ کارروائی کر دی گئی ،ہم بھی بجٹ پر ہونیوالی بحث میں حصہ لیناچاہتے ہیں لیکن اس وقت تک ایوان میں نہیں جائیں گے جب تک سپیکر اپنا غیر قانونی اقدام واپس نہیں لیتے۔دوسری جانب پنجاب اسمبلی میں توڑ پھوڑ اور 6 لیگی ارکان کی معطلی کی تحقیقات کیلئے ایک کمیٹی بنانے کا فیصلہ کر لیا گیا ۔اس حوالے سے سپیکر چودھری پرویز الٰہی نے کہا ہے کہ تحقیقاتی کمیٹی ہنگامے کی ویڈیو کو دیکھ کر مزید کارروائی کرے گی ۔سپیکر پنجاب اسمبلی نے مزید کہا کہ جو زبان استعمال کی جا رہی ہے ایسا لگتا ہے بچوں کی تربیت ہوئی ہی نہیں تاہم کوئی ایوان میں آئے یا نہ آئے اسمبلی قوانین کے تحت کام ہو گا ۔چودھری پرویز الٰہی نے کہا کہ اپوزیشن لیڈر نواب صاحب ہیں، ہاؤس کمیٹی میں آئیں گے تو بات آگے بڑھے گی۔علاوہ ازیں حکومت نے ایوان میں مسلم لیگ(ن)کی ہلڑ بازی کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے استحقاق کی تحریک پیش کردی جو سپیکر کے حکم پر سپیشل کمیٹی کے سپرد کردی گئی ۔ کمیٹی 14روز میں اپنی رپورٹ پیش کرے گی۔قبل ازیں صوبائی وزیر قانون و پارلیمانی امور راجہ بشارت نے ایوان میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ مسلم لیگ(ن) کو سوچنا چاہیے کہ وہ احتجاج میں کیوں اکیلی رہ گئی ہے درحقیقت حمزہ شہباز کی ترجیح پنجاب کے عوام نہیں بلکہ ان کے تایا میاں نوازشریف ہیں جنہیں کرپشن کی بنیاد پر عدلیہ نے نااہل قرار دیا جبکہ میاں شہباز شریف کے کارخاص ہی ان کیخلاف وعدہ معاف گواہ بن رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ہم مسلم لیگ(ن) کو منانے کیوں جائیں، انھوں نے اس ایوان کی توہین کی۔

مزید : کراچی صفحہ اول