اوبر اور کریم پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیونکہ ۔۔۔

اوبر اور کریم پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیونکہ ۔۔۔
اوبر اور کریم پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیونکہ ۔۔۔

  


کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) ٹیکسی سروسز اوبر اور کریم نے بالترتیب 2015ء اور 2016ء میں پاکستان میں آپریشن کا آغاز کیا اور اب لاکھوں لوگ ان کی سروسز سے استفادہ کر رہے ہیں۔ تاہم اب سندھ حکومت نے ان پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ اے آر وائی نیوز کے مطابق اوبر اور کریم پر پابندی کے فیصلے کا اعلان صوبائی وزیر ٹرانسپورٹ اویس شاہ نے کیا ہے۔

اویس شاہ کا کہنا تھا کہ ’’یہ کمپنیاں حکومت کی ہدایات کو نظرانداز کرتے ہوئے آپریٹ کر رہی ہیں۔جب ان کمپنیوں نے پاکستان میں سروسز کا آغاز کیا تھا، تب حکومت نے ان کے ساتھ معاہدے کی یادداشتوں پر دستخط کیے تھے لیکن اس معاہدے اور متعلقہ قوانین کی پاسداری نہیں کر رہیں۔ ان کے ڈرائیوروں کی طرف سے خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کی شکایات بھی تواتر کے ساتھ آ رہی ہیں۔ حال میں میں شاہراہ فیصل پر ایک لڑکی کو چلی گاڑی سے چھلانگ لگانی پڑی کیونکہ ڈرائیور اسے ہراساں کر رہا تھا۔ ان وجوہات کی بناء پر ہم نے ان کمپنیوں پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔‘‘

مزید : قومی /ڈیلی بائیٹس /علاقائی /سندھ /کراچی