بہاولپور میں نوجوان طالبہ کے ساتھ زیادتی کا واقعہ، کون ملوث ہے؟ افسوسناک انکشاف

بہاولپور میں نوجوان طالبہ کے ساتھ زیادتی کا واقعہ، کون ملوث ہے؟ افسوسناک ...
بہاولپور میں نوجوان طالبہ کے ساتھ زیادتی کا واقعہ، کون ملوث ہے؟ افسوسناک انکشاف

  



بہاولپور(آن لائن) طالبہ کو مبینہ طور پر اغوا کرنے کے بعد منشیات دے کر اسے ریپ کرنے والے ڈاکٹرز اور نجی تعلیمی ادارے کے اساتذہ پر مشتمل ایک گروہ کا انکشاف ہوا ہے۔سول لائنز پولیس نے متاثرہ لڑکی کے والد کی شکایت پر 18 اکتوبر کو مقدمہ درج کیا تھا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق مذکورہ لڑکی ملزمان کے چنگل سے نکلنے اور اس گھر سے فرار میں ہونے میں کامیاب ہوگئی تھی جہاں اسے مبینہ طور پر ریپ کا نشانہ بنایا گیا تھا۔لڑکی کے والد کے مطابق لڑکی اپنے گھر سے 16 اکتوبر کو لاپتہ ہوئی تھی جس کے بعد اہلِ خانہ نے اس کی تلاش شروع کردی تھی، والد کے مطابق متاثرہ لڑکی اس وقت ہسپتال میں زیرِ علاج ہے۔اس بارے میں ضلعی پولیس سربراہ کے ترجمان اعجاز حسین شاہ نے کہا ہے کہ لڑکی کے والد، جو ضیاالدین کالونی کے پراپرٹی ڈیلر ہیں، کی شکایت پر تھانہ سول لائنز میں ایف آئی آر درج کرلی گئی تھی۔ایف آئی آر کے مطابق شکایت کنندہ نے کہا کہ اس کی 18 سالہ بیٹی کو اغوا اور ریپ کا نشانہ بنایا گیا جو کہ نہم جماعت کی طالبہ ہے اور ماڈل ٹان کے ایک تعلیمی ادارے میں زیرِ تعلیم ہے۔شکایت کنندہ کا مزید کہنا تھا کہ مذکورہ تعلیمی ادارے میں ان کی بیٹی کی ایک خاتون سمیت 2 ڈاکٹروں اور 2 اساتذہ سے ملاقات ہوئی تھی۔ایف آئی آر کے مطابق والد نے بتایا کہ جب ان کی بیٹی 2 روز بعد گھر واپس آئی تو اس نے دعوی کیا کہ اسے ملزمان نے اغوا کیا آئس دی اور ریپ کا نشانہ بنایا، مذکورہ ملزمان مقدمے میں نامزد کردیے گئے ہیں۔لڑکی کے والد کا مزید کہنا تھا کہ ایف آئی آر درج ہوئے 3 روز گزرنے کے باوجود پولیس ملزمان کو گرفتار نہیں کرسکی۔دوسری جانب اعجاز حسین شاہ نے دعوی کیا کہ اطلاع ملنے پر ڈی پی او سرفراز ورک نے شکایت گزار کو پیر کے روز بلا کر ملزمان کے خلاف کارروائی اور انہیں جلد گرفتار کرنے کی یقین دہانی کروائی تھی۔

مزید : علاقائی /پنجاب /بہاول پور