فضل الرحمان نے احتجاج کی کال واپس لے لی تو ن لیگ اور پیپلز پارٹی کا کیا بنے گا؟سینیٹر فیصل جاوید نے سوال اٹھا دیا

فضل الرحمان نے احتجاج کی کال واپس لے لی تو ن لیگ اور پیپلز پارٹی کا کیا بنے ...
فضل الرحمان نے احتجاج کی کال واپس لے لی تو ن لیگ اور پیپلز پارٹی کا کیا بنے گا؟سینیٹر فیصل جاوید نے سوال اٹھا دیا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) تحریک انصاف کے سینیٹر فیصل جاوید نے کہاہے کہ آج ہی مولانا فضل الرحمان کوحکومت میں کوئی پوزیشن دیدی جائے تو وہ احتجاج کی کال واپس لے لیں گے تو پھر پیپلزپارٹی اورن لیگ کا کیا بنے گا؟

جیونیوز کے پروگرام ”کیپٹل ٹاک“میں گفتگو کرتے ہوئے سینیٹر فیصل جاوید نے کہا کہ اپوزیشن احتجاج کیلئے جوکنٹینربھی پسند کرتی ہے کرلے لیکن عوام کے جان ومال کا تحفظ کرنا بھی حکومت کی ذمہ داری ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان ناصر ف کشمیر کے سفیر بنے بلکہ اسلام کے سفیر بھی بنے اور اقوام متحدہ میں حضرت محمد ﷺ کا پیغام دنیا بھر میں پہنچایا ۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت کشمیر ایشو پیچھے چلا گیا ہے اور مولانا فضل الرحمان کا ایشو آگے آگیاہے ، یہ سب کچھ کرکے یہ کس کوخوش کررہے ہیں ؟ انہوں نے کہا کہ 25نومبر2017کو کس کے کہنے پر سارے پاکستان کے میڈیا کو بین کردیا گیا تھا ؟ یہ حکم اس وقت کے وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے دیا تھا ۔

فیصل جاویدکا کہنا تھا کہ اپوزیشن کو یہ فکر نہیں ہے کہ عمران خان کی حکومت فیل ہوجائیگی ، اپوزیشن کو یہ فکر ہے کہ عمران خان اور عوام مل کر کہیں کامیاب نہ ہوجائیں۔انہوں نے کہا کہ آج ہی مولانا فضل الرحمان کوحکومت میں کوئی پوزیشن دیدی جائے تو وہ احتجاج کی کال واپس لے لیں گے تو پھر پیپلزپارٹی اورن لیگ کا کیا ہوگا؟

مزید : قومی