نیب بلوچستان نے محکمہ معدنیات کے ملازمین، کوئلہ کمپنی کے مالک سمیت 4 افراد کو گرفتار کر لیا

 نیب بلوچستان نے محکمہ معدنیات کے ملازمین، کوئلہ کمپنی کے مالک سمیت 4 افراد ...
 نیب بلوچستان نے محکمہ معدنیات کے ملازمین، کوئلہ کمپنی کے مالک سمیت 4 افراد کو گرفتار کر لیا

  



کوئٹہ(صباح نیوز)محکمہ معدنیات بلوچستان کےافسران و ملازمین کی جانب سے قومی خزانے کو کروڑ وں روپے کا نقصان پہنچانے کا انکشاف ، نیب بلوچستان نےمحکمہ معدنیات کے ملازمین،کوئلہ کمپنی کےمالک سمیت4افراد کو گرفتار کر لیا،محکمہ معدنیات کے بڑے سکینڈل کےدیگرمہروں کےخلاف بھی گھیرا تنگ،مزید گرفتاریاں متوقع، ملزمان کا جسمانی ریمانڈحاصل کر لیا گیا۔

قومی احتساب بیوروبلوچستان نےقومی خزانےکوکروڑوں روپےکانا قابلِ تلافی نقصان پہنچانے کے الزام میں محکمہ معدنیات بلوچستان کے ملازم امتیاز حسین جمالی،ایف بی آر کےملازم زین جبران،کول کمپنی کےمالک عاصم اکبرخان اوربشیر محمدکو کوئٹہ کےمختلف علاقوں سے گرفتارکرلیا۔گرفتارافرادپرالزام ہےکہ انہوں نےملی بھگت سےکرپشن کرتےہوئےقومی خزانےکوکروڑوں روپےکانقصان پہنچایا،ملزمان کواحتساب عدالت کےجج منورشاہوانی کی عدالت میں پیش کیا گیا،احتساب عدالت کے جج نےنیب کی تحقیقاتی ٹیم کی جانب سے اب تک کی گئی تحقیقات اورحاصل شواہد کےبغورجائزے کےبعدملزمان کو13روزہ ریمانڈ پرنیب کےحوالےکردیا ہے۔

نیب بلوچستا ن نے سورس رپورٹ کی بنیاد پر مسلم کول کمپنی کے خلاف تحقیقات شروع کیں توسرکاری اعداد و شمار کے تفصیلی جائزے کے بعد انکشاف ہو اکہ مسلم کول کمپنی کے مالک عاصم اکبر خان نے محکمہ معدنیات سے لیز حاصل کئے بغیر غیر قانونی طور پربلوچستان کے مختلف علاقوں سے 2017-2018کے دوران کروڑوں روپے کاکوئلہ نکال کرفروخت کیا۔مزید براں محکمہ معدنیات کرپشن کیس کےاہم کردارایف بی آر کےملازم زین جبران نےمسلم کول کمپنی سمیت مختلف کوئلہ کمپنیوں سے غیر قانونی معاہدے کئے۔محکمہ معدنیات کے کروڑوں روپے مالیت کےسکینڈل کے سامنے آنےکےبعد نیب بلوچستان نے قومی خزانے کو لوٹنے والے دیگر مہروں کے خلاف بھی گھیرا تنگ کر دیا ہے،اس سلسلے میں مزید گرفتاریاں بھی متوقع ہیں۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور