ایک اورمسلمان ملک نے اسرائیل کو تسلیم کرنے پر رضامندی ظاہر کر دی

 ایک اورمسلمان ملک نے اسرائیل کو تسلیم کرنے پر رضامندی ظاہر کر دی
 ایک اورمسلمان ملک نے اسرائیل کو تسلیم کرنے پر رضامندی ظاہر کر دی
کیپشن:    سورس:   Wikimedia commons

  

واشنگٹن(ڈیلی پاکستان آن لائن)متحدہ عرب امارات اور بحرین کے بعد سوڈان نے بھی اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات قائم کرنے پر رضامندی ظاہر کر دی۔

نجی ٹی وی ہم نیوز نے غیر ملکی خبر رساں ادارے کےحوالےسےرپورٹ دی ہے کہ امریکا صدر ڈونلڈ ٹرمپ، اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو اورسوڈانی رہنماوں کے درمیان ٹیلی فونک رابطہ ہوا، جس کے بعد جاری کردہ مشترکہ بیان میں کہا گیا کہ سوڈان اور اسرائیل نے امریکا کی مدد سے معمول کے سفارتی تعلقات قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔رپورٹ کے مطابق بیان میں کہا گیا کہ امریکاسوڈان کے قرضے کم کرانے میں مدد کرے گا۔اس کے علاوہ امریکی صدر نے ایک اوربیان میں کہا کہ آنے والے دنوں میں مزید کئی ممالک اسرائیل کے ساتھ امن معاہدے کریں گے۔انہوں نے کہا کہ اسرائیل، سوڈان اورچند اور ممالک کے رہنما جلد واشنگٹن آئیں گے۔

خیال رہے کہ گزشتہ ماہ اسرائیل، متحدہ عرب امارات اور بحرین کے درمیان سفارتی تعلقات قائم ہو گئے تھے۔تینوں ملکوں کے درمیان ہونے والے معاہدوں کو ابراہم اکارڈز کا نام دیا گیا تھا۔اس تقریب سے ہی خطاب کرتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ نے پیشگوئی کر دی تھی کہ ایک ماہ میں دو عرب ممالک نے اسرائیل کے ساتھ معاہدے کیے ہیں مزید ممالک بھی اسرائیل کے ساتھ معاہدوں پر دستخط کریں گے۔

مزید :

عرب دنیا -