آئی جی سندھ کا مبینہ اغوا، وزیر اعظم عمران خان بھی میدان میں آگئے

آئی جی سندھ کا مبینہ اغوا، وزیر اعظم عمران خان بھی میدان میں آگئے
آئی جی سندھ کا مبینہ اغوا، وزیر اعظم عمران خان بھی میدان میں آگئے

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ آئی جی سندھ کے اغوا کی بات سن کر انہیں ہنسی آتی ہے۔

نجی ٹی وی اے آر وائی نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے آئی جی سندھ کے مبینہ اغوا کی خبروں پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ مجھے سمجھ نہیں آتی کہ میری پارٹی کے لوگ بھی گھبرا جاتے ہیں، میں نے کہا کہ جلسہ کیا ہے؟ میرے سے زیادہ بڑے جلسے کس نے کیے ہیں؟ کسی نے کہا کہ رانا ثنا اللہ کسی پولیس والے پر گاڑی چڑھانا چاہتا تھا ، اس کو پکڑ لیں، میں نے کہا کہ پکڑ کر کیا کرلینا ہے۔

ایک آدمی آپ کا گھر لوٹ لے ، آپ کے گھر میں قتل کرکے فرار ہوجائے اسے پکڑنا چاہیے لیکن لال بتی کراس کرنے والے کو پکڑ کر جیل میں ڈال دیا جاتا ہے۔ ان کے جرم یہ ہیں انہوں نے اس ملک کو کنگال کردیا ہے۔ جتنا ٹیکس کا پیسہ اکٹھا کیا اس میں سے آدھا ان کے قرضوں کی ادائیگی میں گیا۔ پی پی دور میں ڈھائی ارب ڈالر کی قسط دینا پڑتی تھی، ن لیگ کو 5 اور ہمیں 10 ارب ڈالر دینا پڑتا ہے، یہ پاکستان کی تاریخ میں سب سے زیادہ ہے۔

آئی جی سندھ کے مبینہ اغوا کے حوالے سے سوال پر وزیر اعظم کی دوبارہ توجہ دلوائی گئی تو انہوں نے کہا کہ وہ اس پر کمنٹ ہی نہیں کرنا چاہتے، جب سنتا ہوں تو ہنسی آتی ہے کہ یہ کیا مذاق ہورہا ہے۔ چھوٹی چھوٹی ایف آئی آرز ان کے فائدے میں جاتی ہیں، یہ احمقانہ ہے کہ انہیں چھوٹٰ چھوٹی چیزوں پر ہیرو بنادیتے ہیں

مزید :

قومی -