ہماری باتیں تسلیم کی گئیں،نظر ثانی کی درخواست کیوں دیں؟وفاقی وزیرقانون 

ہماری باتیں تسلیم کی گئیں،نظر ثانی کی درخواست کیوں دیں؟وفاقی وزیرقانون 
ہماری باتیں تسلیم کی گئیں،نظر ثانی کی درخواست کیوں دیں؟وفاقی وزیرقانون 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وفاقی وزیرقانون فروغ نسیم نے کہا ہے کہ فیصلے سے ثابت ہوگیا ریفرنس سچ پر مبنی تھا۔ہماری باتیں تسلیم کی گئیں، نظر ثانی کی درخواست کیوں دیں گے۔ 

نجی ٹی وی سماءنیوز کے پروگرام میں جسٹس قاضی عیسی فائز کے فیصلے پرردعمل دیتے ہوئے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے میں کوئی بھی بات ہمارے یا صدر کے خلاف نہیں تھی، فیصلے سے ثابت ہو چکا ہے کہ ریفرنس سچ پر مبنی تھا۔ عدالت نے کہا درخواست گزار کے پاس خود کو ثابت کرنے کا موقع ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ریفرنس کا ڈرافٹ سیکرٹری نے تیار کیا جس پر میرے دستخط ہیں۔ ہماری باتیں تسلیم کی گئیں،ہم نظر ثانی کی درخواست کیوں دیں گے۔ 

خیال رہے کہ سپریم کورٹ نے قاضی فائز عیسی کیس کا تحریری فیصلہ سناتے ہوئے ریفرنس کو غیرآئینی قرار دے کر خار ج کر دیا تھا۔عدالت  نے کہا تھا کہ جسٹس قاضی فائز  عیسیٰ کے خلاف صدارتی ریفرنس آئین کی خلاف ورزی تھی ،صدرمملکت نےآئین وقانون سےتجاوزکیا،صدر آئین کے مطابق صوابدیدی اختیارات کے استعمال میں ناکام رہے۔ فیصلوں کے خلاف نظر ثانی درخواستیں دائر کرنا آئینی و قانونی حق ہے

مزید :

قومی -