وہ ایئرلائن جس کی ایئرہوسٹسز یونیفارم اُتار کر برہنہ سامنے آگئیں، احتجاج شروع

وہ ایئرلائن جس کی ایئرہوسٹسز یونیفارم اُتار کر برہنہ سامنے آگئیں، احتجاج ...
وہ ایئرلائن جس کی ایئرہوسٹسز یونیفارم اُتار کر برہنہ سامنے آگئیں، احتجاج شروع
سورس: Flickr.com (creative commons license)

  

روم(مانیٹرنگ ڈیسک)اٹلی کی قومی فضائی کمپنی ’ال اطالیہ‘ (Alitalia)مالی بحران کا شکار ہو کر بالآخر خاتمے سے دوچار ہو گئی اور اٹلی کی حکومت نے اس ایئرلائن کو تحلیل کرکے ’آئی ٹی اے ایئرویز‘ کے نام سے نئی قومی ایئرلائن بنا دی ہے۔ گزشتہ ہفتے اس نئی ایئرلائن کی پہلی پرواز نے اڑان بھری تھی۔ حکومت کی طرف سے ال اطالیہ کمپنی کے ایک چوتھائی سٹاف کو آئی ٹی اے ایئرویز میں ملازمتیں دی گئی ہیں مگر پھر بھی ہزاروں لوگ بے روزگار ہو گئے ہیں اور گزشتہ روز ملازمتوں سے ہاتھ دھونے والی 50سے زائد ایئرہوسٹسز نے شرمناک طریقے سے احتجاجی مظاہرہ بھی کر ڈالا۔ 

سی این این کے مطابق ال اطالیہ کی یہ ایئرہوسٹسز اپنی ختم ہو جانے والی فضائی کمپنی کی یونیفارم میں ملبوس روم کے علاقے کیمپیوڈوگلیو میں اکٹھی ہوئیں اور وہاں احتجاجاً یونیفارم اتار کر برہنہ ہو گئیں۔ ایئرہوسٹسز برہنہ حالت میںال اطالیہ کے خاتمے اور اپنی نوکریاں کھونے پر نعرے بازی بھی کرتی رہیں۔ وہ احتجاج کے دوران ’ہم ال اطالیہ ہیں‘ جیسے نعرے لگا رہی تھیں۔ اس حوالے سے ٹریڈ یونینز کا کہنا ہے کہ ایک طرف بڑی تعداد میں ال اطالیہ کا سٹاف بے روزگار ہو گیا ہے اور جن لوگوں کو آئی ٹی اے ایئرویز میں ملازمت دی گئی ہے، انہیں بہت کم تنخواہ پر رکھا گیا ہے اور ان کی سنیارٹی بھی ختم کر دی گئی ہے۔ رپورٹ کے مطابق یونینز آئی ٹی اے ایئرویز کی نئی انتظامیہ کے ساتھ مذاکرات جاری رکھے ہوئے ہے۔ 

واضح رہے کہ ال اطالیہ 74سال تک آپریشنز جاری رکھنے والی دنیا کی معروف ترین فضائی کمپنی تھی۔ اس کی آخری پرواز جمعرات کے روز اڑی اور اس کے بعد یہ تاریخی فضائی کمپنی ماضی کا حصہ بن گئی۔سات دہائیوں سے زائد عرصے تک تمام براعظموں کے مختلف ممالک میں پروازیں چلانے والی یہ کمپنی دیوالیہ ہو گئی تھی۔ 10ہزار سے زائد ملازمین کی حامل یہ کمپنی خسارے کا شکار ہوئی اور اس پر قرضوں کا بوجھ بڑھتا چلا تھا جو اس کے انہدام کا سبب بن گیا۔2002ءکے بعد سے یہ کمپنی مسلسل خسارے میں جا رہی تھی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -