فوج اور پارلیمینٹ میں مشاورت ہونی چاہئے،حتمی فیصلہ پارلیمینٹ ہی کرے گی،سینیٹر رضا ربانی

فوج اور پارلیمینٹ میں مشاورت ہونی چاہئے،حتمی فیصلہ پارلیمینٹ ہی کرے ...

اسلام آباد(این این آئی) پارلیمنٹ کی قومی سلامتی کمیٹی کے چیئرمین سینیٹر رضا ربانی نے کہاہے کہ فوج اور پارلیمنٹ میں مشاورت ہونی چاہیے ، حتمی فیصلہ پارلیمنٹ ہی کرے، جمہوریت میں فوج کو پارلیمنٹ و عوام کے تابع ہونا پڑتا ہے ،پارلیمنٹ نے اچھی ابتدا کی، فوج نے بھی قدم بڑھایا، ابتدا کو اب ختم نہیں کیا جاسکے گا ،یوم عشق رسول ﷺ کے موقع پر احتجاج میں پرتشدد واقعات سے عاشقان رسول ﷺ کو نقصان ہوا ہے۔ ہفتہ کو یوتھ پارلیمنٹ کی تقریب سے خطاب میں کرتے ہوئے جمہوریت میں فوج کو پارلیمنٹ و عوام کے تابع ہونا پڑتا ہے، قیام پاکستان کے آغاز سے ہی ملک میں سول و ملٹری بیوروکریسی نے جنم لے لیا تھا، موجودہ حکومت ہو یا کوئی اور ، وہ اس بیوروکریسی کی یرغمالی رہی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ موجودہ عدلیہ ملک کی پہلی عدلیہ ہے جس نے آمر کے اقدام کی توثیق نہیں کی، رضا ربانی نے کہاکہ فوج کا قومی سلامتی میں کردار ہے لیکن رات کو شب خون مارنے والوں کی حمایت نہیں کی جاسکتی، نیشنل سکیورٹی کونسل نہیں بنناچاہیے کیونکہ یہ ایک فوجی آمر کے ذہن کی اختراع ہے،اس کی بجائے کابینہ کی دفاعی کمیٹی کو مضبوط بنانا چاہیے۔ انہوں نے کہاکہ اب ہمارا ملک ، ایک وفاق کے بغیر زندہ نہیں رہ سکتا، رضا ربانی کا کہناتھاکہ یوم عشق رسول ﷺ کے موقع پر احتجاج میں پرتشدد واقعات سے عاشقان رسول ﷺ کو نقصان ہوا ہے۔

مزید : صفحہ آخر