پولیس نے دہشتگردی ایکٹ، کار سرکار میں مداخلت، پولیس مقابلے اور ڈکیتی جیسی سنگین دفعات کے تحت مقدمے درج کرکے گرفتار سینکڑوں افراد کو دہشتگردی کی خصوصی عدالت میں پیش کر دیا، گرفتار افراد پر تشدد لواحقین مختلف تھانوں کے باہر احتجاج کرتے رہے

پولیس نے دہشتگردی ایکٹ، کار سرکار میں مداخلت، پولیس مقابلے اور ڈکیتی جیسی ...

لاہور (خبر نگار) یوم عشق رسول کے موقع پر مظاہروں کے دوران گرفتار ہونے والے متعدد افراد پر پولیس کا بہیمانہ تشدد باقاعدہ ثابت ہو گیا ہے۔ گزشتہ روز انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت میں گرفتار ملزمان کو جب پیش کیا گیا تو ایک درجن سے زائد ملزمان عدالت میں پھٹ پڑے جس پر عدالت نے تفتیشی افسر کو سرزنش کی اور سخت نوٹس لیتے ہوئے 10 افراد کے میڈیکل معائنہ کروانے کا حکم دے دیا۔ گرفتار شدگان نے عدالت کو بتایا کہ پولیس نے ان پر بہیمانہ تشدد کیا ہے اور توڑ پھوڑ کے مقدمے میں بلاوجہ ملوث کیا گیا ہے جس پر عدالت نے جہانزیب وغیرہ افراد کے میڈیکل رپورٹ کے بعد رپورٹ کل صبح طلب کر لی ہے۔

مزید : صفحہ اول