اونچی دکان پھیکا پکوان،لیبارٹری نے خاتون کا حمل ضائع کروادیا صارف عدالت کاسخت نوٹس

اونچی دکان پھیکا پکوان،لیبارٹری نے خاتون کا حمل ضائع کروادیا صارف عدالت ...

لاہور(خبر نگار) مقامی لیبارٹری نے بدنظمی اور زیادہ فیس کے لالچ میں6 ماہ کی حاملہ خاتون کا حمل ضائع کروا دیا، خاتون نے حمل نہ ہونے کی پہلی رپورٹ پر انحصار کرتے ہوئے معمولی سی دوائی کھائی جس سے وہ بے ہوش ہو گئی، جس پر اس کے لواحقین اور اہل محلہ مقامی لیبارٹری کے خلاف سراپا احتجاج بن گئے، خاتون نے ہزاروں روپے خرچ کر کے دوسرے ہسپتال میں پہنچایا گیا جہاں خاصی تگ و دو کے بعد ہوش میں لایا گیا، خواتین اور عزیز و اقارب ذمہ دار ہیں ، ذمہ داران کے خلاف عدالت میں پہنچ گئے، جس پر صارف عدالت نے سخت نوٹس لیتے ہوئے خاتون فاطمہ سمیر کے خاوند محمد سمیر کی درخواست پر لیبارٹری کے مالک اور دیگر ذمہ داروں کے مالک اور دیگر ذمہ داروں کو9 اکتوبر کو طلب کر لیا ہے، صارف عدالت میں خاتون فاطمہ سمیر نے اپنے خاوند کے ہمراہ زارو قطار روتے ہوئے شکایت پیش کی کہ وہ6 ماہ کی حاملہ تھی اور مقامی لیبارٹری سے بچہ کی حرکت معلوم کرنے کیلئے الٹرا ساﺅنڈ کروانے گئی تو لیبارٹری نے اپنی رپورٹ میں حاملہ نہ ہونے کی رپورٹ دی جس پر اس نے رپورٹ پر انحصار کرتے ہوئے دوائی استعمال کر لی کہ ساتھ ہی طبیعت خراب ہو گئی اور مقامی ہسپتال کے گائنی وارڈ میں داخل کروایا گیا تو ڈاکٹروں کی ٹیم نے دوبارہ الٹرا ساﺅنڈ کیا تو 6 ماہ کی حاملہ ڈیکلیئر کر دیا اور دوائی کھانے کے باعث طبیعت خراب ہونے پر ڈاکٹروں کو آپریشن کر کے حمل ضائع کرنا پڑا خاتون نے عدالت کو بتایا کہ مقامی لیبارٹری کے غلط ٹیسٹ اور الٹرا ساﺅنڈ کی غلط رپورٹ پر اس کا 6 ماہ کا حمل ضائع ہوا ہے اور اسے ذہنی ٹارچر ہوا ہے، جس پر عدالت نے سخت نوٹس لیتے ہوئے مقامی لیبارٹری کے مالک اور دیگر ذمہ داروں کو9 اکتوبر کو طلب کر لیا ہے۔

مزید : ایڈیشن 1