ہزاروں خواہشیں ایسی کہ ہر خواہش پر دم نکلے

ہزاروں خواہشیں ایسی کہ ہر خواہش پر دم نکلے
ہزاروں خواہشیں ایسی کہ ہر خواہش پر دم نکلے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

 کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) پی آئی اے کے منیجنگ ڈائریکٹر کیپٹن محمد جنید یونس نے کہا ہے کہ قومی فضائی کمپنی اپنے پاﺅں پر کھڑا ہونے کی پوری صلاحیت رکھتی ہے۔ پی آئی اے ایک سال میں بغیر نفع نقصان کی حالت میں آجائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ پی آئی اے سے کوئی ملازم نہیں نکالا جائے گا۔8جہازوں کی مرمت ہوگئی ہے۔ اس وقت فضائی بیڑے کے 32طیاروں میں سے 26کے آپریشنل ہونے کے بعد پی آئی اے ٹریک پر آگئی ہے۔وہ پیر کو پی آئی اے ہیڈ آفس میں میڈیا کے نمائندوں سے خطاب کررہے تھے۔ ہمارے پاس 38سے 40جہاز ہوں تو پی آئی اے کو حکومت سے امداد کی ضرورت نہیں ہو گی۔انہوں نے کہا کہ ادارے کو مالی بحران سے نکالنے کے لیے قابل عمل پلان بنالیا ہے ,حکومت کو یقین دلاتا ہوں کہ ہم حکومتی وسائل پر مزید بوجھ نہیں ڈالیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے دنیا کی بڑی ایئر لائنوں کی طرح صرف منافع بخش روٹس پر پروازیں چلانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ایمسٹرڈیم اور فرینکفرٹ کی پروازیں بند کر دی گئی ہیں اور ان طیاروں کو اب خلیجی ممالک کی منافع بخش پروازوں کےلئے استعمال کیا جائے گا۔ اسی طرح اندرون ملک کی پروازوں کی تعداد بھی منافع بخش روٹس پر بڑھا دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے نئے طیاروں کی خریداری کے تمام انتظامات مکمل کر لئے ہیں۔ اس سے پہلے مختلف وجوہات کی بنیاد پر نئے طیاروں کی خریداری میں مشکلات رہیں لیکن اب بہت جلد نئے طیارے فضائی بیڑے میں شامل ہو جائیں گے۔ اگر ہمارے پاس 38سے 40 طیاروں ہو ں تو ہم منافع کمانا شروع کر دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ 2013 ءپی آئی اے کےلئے طیاروں کی کمی کی وجہ سے مشکلات کا سال رہا سعودی قوانین کے باعث عمرہ کےلئے بھی مسافروں کی تعداد میں کمی رہی۔ لیکن اب نتائج مثبت آرہے ہیں اور ریونیو میں بھی اضافہ ہو رہا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ملازمین کی مدد سے ائر لائن میں بہتری آرہی ہے ۔جس کی تازہ مثال پی آئی اے کا موجودہ حج آپریشن ہے جس کے دوران تمام پروازیں اپنے مقررہ وقت پر روانہ ہو رہی ہیں۔ آج تک 29 ہزار سے زائد عازمین کو حجاز مقدس پہنچایا جا چکا ہے اس دوران پروازوں کی کے بروقت روانگی کی شرح 95 فیصد رہی۔ طیاروں کی دستیابی سے پروازوں میں ہونے والی تاخیر پر قابو پانے میں مدد ملی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس