اسرائیلی فوج نے نہتی 13 سالہ بچی پر ایسی وجہ سے گولی چلادی کہ جان کر آپ کو شدید غصہ آئے گا

اسرائیلی فوج نے نہتی 13 سالہ بچی پر ایسی وجہ سے گولی چلادی کہ جان کر آپ کو شدید ...
اسرائیلی فوج نے نہتی 13 سالہ بچی پر ایسی وجہ سے گولی چلادی کہ جان کر آپ کو شدید غصہ آئے گا

  



یروشلم (نیوز ڈیسک) مظلوم فلسطینیوں پر اسرائیل کے لرزہ خیز مظالم کئی دہائیوں سے جاری ہیں مگر عالمی برادری اور خصوصاً مسلم ممالک نے افسوسناک چپ سادھ رکھی ہے۔ دنیا کی اس بے حسی کا نتیجہ یہ ہوا ہے کہ آج اسرائیلی فوجی فلسطینیوں کے بچوں کو بھی بے فکری کے ساتھ گولیوں سے بھون رہے ہیں کیونکہ کوئی ان کا ہاتھ روکنے والا نہیں۔ مغربی کنارے کی آلفِ مناشی آبادی کے قریب بھی گزشتہ روز ایک ایسا ہی بھیانک واقعہ پیش آیا کہ جس کا تصور کرکے ہی انسان کا دل کانپ اٹھتا ہے۔

یورپ کے بعد امریکہ میں بھی مسلمانوں پر عرصہ حیات تنگ ہونے لگا،ایسا انکشاف کہ آپ بھی افسردہ ہوجائیں گے

ویب سائٹ ہارٹز کی رپورٹ کے مطابق ایک 13 سالہ فلسطینی لڑکی اسرائیلی فوج کی سرحدی چوکی کے پاس سے گزررہی تھی کہ فوجیوں نے اسے روکنے کا حکم دیا۔ ابھی اس لڑکی نے مزید ایک قدم ہی بڑھایا تھا کہ اس پر گولیوں کی بوچھاڑ کردی گئی اور وہ خون میں لت پت ہوکر وہیں کرگئی۔ ظالم اسرائیلیوں نے زمین پر تڑپتی ہوئی لڑکی کو طبی مدد فراہم کرنے کی بجائے پہلے اس کی تلاشی لینا ضروری سمجھا، لیکن مکمل تلاشی کے بعد پتہ چلا کہ اس کے پاس کوئی ہتھیار تو کیا ایک کانٹا تک نہ تھا۔

نہتی اسرائیلی لڑکی پر گولیاں برسانے والے بے حس اسرائیلیوں نے بعدازاں یہ بیان جاری کر دیا کہ اسے رُکنے کا اشارہ کیا گیا تھا لیکن وہ اس کے باوجود فوجی چوکی کی طرف بڑھتی جارہی تھی جس پر اسے گولی مارنا پڑی۔وحشیانہ حملے کا نشانہ بننے والی لڑکی شدید زخمی ہے تاہم اس کی حالت خطرے سے باہر بتائی گئی ہے۔

مزید : بین الاقوامی