بچوں کاگھر چھوڑ کرجانے کا غم ماں کو زیادہ ہوتا ہے یا باپ کو؟تحقیق میں ایسا انکشاف کہ آپ کے سارے اندازے غلط ثابت ہوجائیں گے

بچوں کاگھر چھوڑ کرجانے کا غم ماں کو زیادہ ہوتا ہے یا باپ کو؟تحقیق میں ایسا ...
بچوں کاگھر چھوڑ کرجانے کا غم ماں کو زیادہ ہوتا ہے یا باپ کو؟تحقیق میں ایسا انکشاف کہ آپ کے سارے اندازے غلط ثابت ہوجائیں گے

  



میڈرڈ(مانیٹرنگ ڈیسک) باپ کی نسبت ماں کی اپنے بچوں سے قربت بہت زیادہ ہوتی ہے کیونکہ بچوں کی پرورش کی ذمہ داری زیادہ تر ماں کے کندھوں پر ہی ہوتی ہے۔ بچپن سے لے کر بلوغت کی دہلیز پر قدم رکھنے تک عموماً ماں ہی بچوں کی بیشتر ضروریات کا خیال رکھتی ہے اور ان کی دیکھ بھال کرتی ہے۔ جب بچے بڑے ہو جاتے ہیں اور تعلیم یا روزگار کے سلسلے میں گھر چھوڑ کر جاتے ہیں تو یقینا ماں ہی کو ان کی جدائی کا دکھ زیادہ ہوتا ہے مگر اب ماہرین نے اپنی ایک نئی تحقیق میں اس تصویر کا دوسرا رخ بیان کر دیا ہے۔ برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق ماہرین کا کہنا ہے کہ ”اگرچہ بچوں کے گھر چھوڑ کر جانے کا دکھ ماں کو زیادہ ہوتا ہے مگر اس دکھ کو باپ، ماں سے کہیں زیادہ محسوس کرتا ہے۔“

کسی اجنبی کے چہرے کی طرف 3سیکنڈ سے زائد نہ دیکھیں کیونکہ۔۔۔ سائنسدانوں نے ایسی وجہ بتادی کہ جان کر آپ بھی اس پر عمل کریں گے

اس کی وجہ بیان کرتے ہوئے ماہرین کا کہنا تھا کہ ”مائیں اپنے بچوں کی جدائی کے متعلق کھل کر بات کر لیتی ہیں، بالخصوص دیگر خواتین کے ساتھ اپنے دکھ بانٹ لیتی ہیں اور رو لیتی ہیں لیکن باپ اپنے بچوں کی جدائی کا دکھ اپنے سینے میں ہی رکھتے ہیں۔ انہیں یہ دکھ انتہائی خاموشی کے ساتھ سہنا ہوتا ہے لہٰذا وہ اپنے بچوں کے گھر چھوڑ کر جانے پر ماﺅں کی نسبت زیادہ دکھی ہوتے ہیں۔“ رپورٹ میں سپین کے برین وائنر نامی شخص کی مثال دی گئی ہے جس کا 18سالہ بیٹا جیکب اپنی 4سالہ ڈگری مکمل کرنے کے لیے گھر سے 100کلومیٹر دور ایک یونیورسٹی میں پڑھنے کے لیے گیا ہے۔ برین کا کہنا ہے کہ ”جیکب شروع سے اپنی ماں ہی کے زیادہ قریب رہا۔ اسی نے اس کی پرورش کی اور اس کی ہر ضرورت کا خیال رکھا۔ آج جب وہ یونیورسٹی کی تعلیم کے لیے گھر چھوڑ کر گیا ہے تو وہ گھر میں یا دیگر ماﺅں کے ساتھ کھل کرجیک کی جدائی کے متعلق بات کر لیتی ہے اور اپنے دل کی بھڑاس نکال لیتی ہے لیکن میرے اردگرد ایسا کوئی نہیں جس سے میں اس موضوع پر بات کر سکوں۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...