ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کا تھرڈ پارٹی آڈٹ کرانے کا فیصلہ

ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کا تھرڈ پارٹی آڈٹ کرانے کا فیصلہ

  



لا ہور (جنر ل ر پور ٹر )لاہور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کے اخراجات، بھرتیوں، منصوبوں اور خریداریوں کا شفاف تھرڈ پارٹی آڈٹ کرانے کا فیصلہ کرلیا گیا، ضلعی انتظامیہ نے اربوں روپے کے فنڈز کا آڈٹ کرانے کے لئے سیکرٹری لوکل گورنمنٹ کو خط لکھ دیا۔تفصیلات کے مطابق ایل ڈبلیو ایم سی کے پروکیورمنٹ، ہیومن ریسورس اور دیگراخراجات کا مفصل آڈٹ ہوگا۔ لینڈ فل سائٹ، بائیو گیس، ویسٹ ٹو انرجی سمیت ملازمین کی بھرتیاں، کنٹریکٹرز کو ادائیگیوں، ڈیزل کے استعمال اور اخراجات کا آڈٹ ہوگا۔ذرائع کے مطابق ڈی سی او لاہور کیپٹن ریٹائرڈ محمد عثمان نے پنجاب حکومت کے اربوں روپے کے فنڈز کا شفاف آڈٹ کرانے کا مطالبہ کیا تھا۔ذرائع نے کہاکہ وفات پا جانے والے اور ریٹائرڈ ملازمین کو تنخواہیں جاری ہونے کے انکشاف کے بعد تھرڈ پارٹی آڈٹ کا معاملہ بڑھا، انٹرنل آڈٹ کے ہوتے ہوئے تھرڈ پارٹی آڈٹ پر کمپنی حکام کو تحفظات تھے۔ خط میں سیکرٹری لوکل گورنمنٹ سے شفاف آڈٹ کے ٹی اوآرز کی منظوری کی استدعا کی گئی ہے۔ذرائع نے مزید کہا کہ سیکرٹری لوکل گورنمنٹ نے ڈی سی او کی جانب سے بھجوائے گئے آڈٹ ٹی او آرز کو منظور کیا جارہا ہے تاہم تھرڈ پارٹی آڈٹ شروع کرنے کی منظوری بعد میں ہوگی جس کے ساتھ ہی تھرڈ پارٹی آڈٹ کا کنٹریکٹ مشتہر کیا جائے گا۔کمپنی کے قواعد و ضوابط میں بطور مانیٹرنگ اتھارٹی ضلعی انتظامیہ نے اربوں روپے کے اخراجات کا حساب مانگا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1