وزیراعظم نواز شریف کا جان کیری کو دو ٹوک جواب

وزیراعظم نواز شریف کا جان کیری کو دو ٹوک جواب

  



پاکستان نے امریکہ کی طرف سے ایٹمی پروگرام کو محدود کرنے کا مطالبہ مسترد کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ امریکہ، موجودہ حالات میں پاکستان سے وہ مطالبہ ہر گز نہ کرے، جو مطالبہ امریکہ اپنے اتحادی بھارت سے نہیں کرسکتا۔ نیو یارک میں قیام کے دوران وزیراعظم نواز شریف سے امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے ملاقات کی اور کہا کہ پاکستان اپنے ایٹمی پروگرام کو محدود کرے، اس کے جواب میں وزیر اعظم نواز شریف نے کہا کہ خطے کے حالات کو دیکھتے ہوئے پاکستان کے ایٹمی پروگرام پر یکطرفہ بات نہیں کی جاسکتی۔ سب سے پہلے بھارت کے ایٹمی پروگرام کو روکا جائے۔ وزیراعظم نواز شریف نے امریکی وزیر خارجہ جان کیری کو دو ٹوک الفاظ میں بتایا کہ پاکستان سے اس بات کا تقاضا نہ کیا جائے، جن ایٹمی اقدامات کا مطالبہ آپ ہم سے کررہے ہیں، وہ مطالبہ آپ بھارت سے کریں۔ امریکی وزیر خارجہ جان کیری کو پاکستان کے دو ٹوک جواب سے پتہ چلا ہے کہ وزیر اعظم نواز شریف نے امریکی انتظامیہ کو حقیقت پسندانہ پالیسی اختیار کرنے کی طرف اشارہ کیا اور پاکستان اور بھارت کے حوالے سے انصاف پر مبنی بات چیت کامشورہ دیا ہے۔ ان کے موقف سے یہ بھی واضح ہوگیا ہے کہ ایٹمی پروگرام جیسے حساس ترین ایشو پر پاکستان سے یکطرفہ طور پر کوئی مطالبہ کرنا جائز نہیں۔ امریکی عہدیداروں کی یہ عادت ہے کہ اپنے اتحادیوں، خصوصاً پاکستان کی قربانیوں کو نظر انداز کرتے ہیں اور مختلف معاملات میں پاکستان کے کردار کو ناکافی قرار دینے کی پالیسی امریکہ کی عادت بن چکی ہے۔ پاکستان سے بات چیت کے دوران میں ’’ڈو مور‘‘ کی گردان کو ضروری سمجھا جاتا ہے۔تازہ ترین بات چیت میں بھی مُلّا فضل اللہ اور اُن کے نیٹ ورک کے خلاف مزید کارروائی کا مطالبہ کیا گیا، حالانکہ پاکستان نے کوئی کمی نہیں چھوڑی۔ مُلا فضل اللہ پاکستان میں نہیں، افغانستان میں موجود ہے۔اب پاکستان کو اپنے ایٹمی پروگرام کو محدود کرنے کے بارے میں امریکہ نے فرمائش کردی، جس کا کوئی جواز نہیں ۔ امریکہ کو اپنے کردار کے حوالے سے اگر اِس خطے یا عالمی سطح پر پاکستان کے ایٹمی پروگرام سے کوئی خطرہ محسوس ہوتا ہے تو سب سے پہلے اسے اپنے اتحادی ملک بھارت کی خبر لینی چاہیے جس کا ایٹمی پروگرام کافی وسیع ہے اور بھارت ایسا ملک ہے، جس سے ذمہ داری کی توقع نہیں کی جا سکتی۔ وزیراعظم نواز شریف کے دو ٹوک جواب سے وطن عزیز میں عوامی حلقوں کو حوصلہ افزأ پیغام پہنچا ہے۔

مزید : اداریہ


loading...