احمد ریحامی نے بم دھماکے القاعدہ اور داعش کی حمایت میں کئے

احمد ریحامی نے بم دھماکے القاعدہ اور داعش کی حمایت میں کئے

  



واشنگٹن(اظہر زمان،بیورچیف) نیور یارک اور نیوجرسی میں حالیہ بم دھماکوں کے ملزم احمد خان ریحامی کے بارے میں تفتیش کرنے والے اداروں کو اب یقین ہو گیا ہے کہ اس نے یہ دہشت گرد کاروائیاں القاعدہ اور داعش سے تحریک حاصل کرنے کے بعد ان کی حمایت میں کی ہیں۔ نیو جرسی ریاست کے شہر الزتھ کے رہنے والے اس افغان نژاد امریکی 28سالہ نوجوان نے آٹھ مقامات پر پریشر ککر اور پائپ بم نصب کئے تھے جن میں سے صرف دو17ستمبر کو چل سکے ایک مین ہٹن دوسرا نیو جرسی میں48گھنٹے کی تلاش کے بعد ایک ناکارہ ہونے والے پریشر ککر بم میں انگلیوں کے نشانات اور ملزم کے سیل فون کی لوکیشن دریافت کرنے کے بعد بند ریسٹورنٹ میں پولیس نے پکڑلیا۔گرفتاری سے قبل فائرنگ کا تبادلہ ہوا اور جس سے دو پولیس آفیسر اور ملزم زخمی ہوئے۔ملزم ریحامی اس وقت ایک ہسپتال میں پولیس کی زیر حراست ہے۔ملزم کو گرفتار کرتے وقت اس سے ایک نوٹ بک بھی برآمد ہوئی جو مقابلے کے باعث خون آلودہ ہوئی اور اس کے اوراق بھی پھٹ گئے۔پولیس کے مطابق اس نوٹ بک میں شامل اس کی تحریریں ایک طرح کا اعتراف جرم ہیں جس میں اس نے اسامہ بن لادن سمیت القاعدہ اور داعش کے متعدد لیڈروں کی تعریف کی اور ان کی حمایت کرتے ہوئے لکھا ہے کہ بہت جلد ان سڑکوں پر دھماکوں کی آوازیں سنائی دیں گی۔رپورٹ میں القاعدہ کے لیڈر انوار الاولیکی اور فورٹ ہڈ میں شوبٹنگ کرنے والے امریکی فوجی ندال جن کا خصوصی حوالہ بھی موجود ہے۔اس نے بار ہا انشاء اللہ کے الفاظ استعمال کرتے ہوئے یقین ظاہر کیا ہے کہ جلد ختم ہوجائے گا۔

مزید : صفحہ آخر