سندھ اسمبلی، 1997سے 2006کے دوران برطرف ملازمین بحال کرنے کا بل منظور

سندھ اسمبلی، 1997سے 2006کے دوران برطرف ملازمین بحال کرنے کا بل منظور

  



کراچی ( اے این این ) سندھ اسمبلی میں 1997سے 2006 کے دوران برطرف ملازمین بحال کرنے کا بل منظورکرلیاگیاجبکہ وزیر اعلی سیدمراد علی شاہ علی شاہ نے کہاہے کہ سیاسی انتقام لیکر لوگوں کو ملازمت سے نکالا گیا، جیالوں کو میرٹ پر ملازمتیں دی گئیں۔جمعرات کو سندھ اسمبلی کا اجلاس ڈیرھ گھنٹے تاخیر سے اسپیکر آغا سراج درانی کی صدارت میں شروع ہوا ۔ وزیر پارلیمانی امورنیسندھ برطرف ملازمین بحالی بل 2016 پیش کیا جس کے تحت نواز شریف دور میں 1997 سے 2006 کے دوران برطرف ملازمین کو تنخواہوں اور مراعات کے ساتھ بحال کیا جائے گا۔ مسلم لیگ فنکشنل کی نصرت سحر عباسی نے کہا کہ پورے سندھ کو پتہ چلنا چاہیے کہ یہ لوگ کیوں برطرف ہوئے۔ مسلم لیگ( ن) کے اسماعیل راہو نے کہا کہ برطرف ملازمین کی بحالی کے بل پر ہمیں اعتراضات ہیں۔ اکثریت کی بنیاد پر غلط کام نہ کیا جائے ۔ وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ نے بحث کو سمیٹتے ہوئے کہا کہ میں وزیراعلی ہوں مگر جیالا بھی ہوں ۔ سیاسی انتقام لیکر لوگوں کو ملازمت سے نکالا گیا۔ بحال کئے جانے والوں میں جیالے ہونگے میں بھی جیالا ہوں ۔ جیالوں کو میرٹ پر ملازمتیں دی گئی ہیں ۔ برطرف ملازمین کو قانونی تحفظ فراہم کررہے ہیں ایسا نہ ہو کہ کوئی ڈکٹیٹر یا ڈکٹیٹر کا ساتھی آکر ان ملازمین کو پھر برطرف نہ کردے۔ بعد میں ایوان نے بل کی منظوری دے دی ، اجلاس آج کودوبارہ ہوگا ۔

مزید : صفحہ آخر


loading...