پی ٹی آئی حکومت نے مایوسی کے سوا کچھ نہیں دیا ،حسن زادہ

پی ٹی آئی حکومت نے مایوسی کے سوا کچھ نہیں دیا ،حسن زادہ

  



بونیر (ڈسٹرکٹ رپورٹر )بونیر کے علاقہ ریگا کے رہائشی مظلوم حسن ذادہ نے کہاہے کہ بیٹے کی نوکری کے حصول کے لئے مرکزی بازار سواڑی میں دھرنا دئے 20 مہینے پورے ہوگئے ۔مگر انصاف کے دعویدار پی ٹی ائی کے صوبائی حکومت نے مجھے مایوسی کے سوا کچھ نہیں دیا ،بونیر کے منتحب ممبران صوبائی اسمبلی ،ممبر قومی اسمبلی سمیت ہر فورم پر آواز اٹھائی مگر کسی کو میرے حال پر رحم نہیں ایا ،بونیر کی ضلعی انتظامیہ اور پاک آرمی سے مدد کی درخواست دی ہے ۔انہوں نے مجھے انصاف دینے کا وعدہ کیاہے ۔وزیر اعلی خیبر پحتون خواہ میرے حال پر رحم کرکے میرے بیٹے کو کسی اور محکمہ میں ملازمت دے تاکہ باقی ماندہ زندگی ارام سے گزار سکوں ۔ڈگر میں مقامی صحافیوں سے گفتگوں کرتے ہوئے مظلوم حسن ذادہ نے کہا کہ میں نے گیج ریڈر کی حیثیت سے محکمہ ائرگیشن میں اپنے زندگی کے ساٹھ سال گزارے اور ریٹائرڈ ہوگیا ،میں نے اپنے پوسٹ پر اپنے بیٹے کی نوکری کے لئے دوخواست دی جو میرٹ کے لخاظ سے پورا تھا ،مگر محکمہ کے صوبائی وزیر نے اپنے حلقہ کے ووٹر جو کہ میرے بیٹے کا ہم نام تھا ،بونیر کی واحد پوسٹ پر لگا کر میرے بیٹے کی حق تلفی کی ،جسکے خلاف میں نے سواڑی بازار میں دھرنا دیا جو ابھی تک جاری ہے ۔میں نے اس ظلم کے خلاف پشاور پریس کلب میں پریس کانفرنس کے ساتھ ساتھ صوبائی اسمبلی کے سامنے احتجاج بھی کیا ،مگر ہمارے صوبہ کے ممبران اسمبلی نے مجھے مایوس کیا ،انہوں نے کہا کہ میں ایک غریب ادمی ہو ں ،میں اپنے خاندان کا واحد کفیل تھا ،موجودہ پنشن میں میرا گزار مشکل سے ہورہاہے ،میں نے ڈی سی بونیر کو بھی بیٹے کی نوکری کے لئے درخواست دی ہے ،میں وزیر اعلی خیبر پحتون خواہ پرویز خٹک سے ہمدردانہ اپیل کرتا ہوں کہ میرے بیٹے کو بونیر کے کسی اور محکمہ میں کلاس فور کی نو کری دی جائے تاکہ میں اپنی باقی ماندہ زندگی ارام سے گزار سکوں ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...