اعلیٰ پولیس افیسر کے بھٹہ پر تشدد سے مزدور ہلاک ، سخت سکیورٹی میں تدفین

اعلیٰ پولیس افیسر کے بھٹہ پر تشدد سے مزدور ہلاک ، سخت سکیورٹی میں تدفین

  



اڈا پل 14(نما ئند ہ پا کستا ن ) رائے ونڈکے قریب جہانیاں کا رہائشی پولیس کے اعلیٰ افسر کے بھٹہ پر نوجوان مزدورتشدد سے ہلاک ، جہانیاں میں پولیس پرٹوکول میں جنازہ اور تدفین ، پورا خاندان خوف کے مارے تدفین سے قبل (بقیہ نمبر18صفحہ12پر )

ہی گاؤں چھوڑ کر چلا گیا ،رشتہ دار اور عزیزواقارب تشویش میں مبتلا تفصیل کے مطابق جہانیاں کے رہائشی خاندان رائے ونڈ کے نزدیک پولیس کے اعلیٰ افسر کے بھٹہ پر کام کرتے تھے یہاں سے مزدور خاندان کام چھوڑ کر فتح پور بھوانہ روڈ جھنگ چلے گئے اعلیٰ پولیس افسر نے انھیں وہاں سے پورے خاندان کو اغوا کروا لیا اور بدترین تشدد کیا جس سے خاندان کا نوجوان محمد رمضان تشدد سے ہلاک ہوگیا جس کی تشدد زدہ لا ش دو دن بھٹہ پر موجود رہی اسکے بعد رات گئے جہانیاں میں خان برکس چک 113دس آر منتقل کر دی گئی لاش کو جہانیاں پولیس اپنی تحویل میں لیکر ورثا کے حوالے کرنے کی بجائے خان برکس پر ہی جنازہ کروادیا گیا اور تدفین کے لیے پولیس جہانیاں ، سکیورٹی برانچ اور سپیشل برانچ کی دیوٹی لگا دی گئی صحافیوں نے جب ورثا سے رابطہ کیا تو محمد اسلم نامی رشہ دار نے بتایا کہ مقتول محمد رمضان کے جسم پر بد ترین تشدد کے نشانات تھے ہمیں لاش کے نزدیک نہ آنے دیا بلکہ لاش سے شدید تعفن اٹھ رہا تھا اور ہمیں جنازہ کے لئے گاؤں میں بھی لاش نہ لیکر جانے دی گئی مقتول محمد رمضان کے بھائی ، بہن اور بیوہ جو کہ لاش کے ساتھ آئے تھے مگر پر اسرار طور پر غائب ہو گئے پولیس اور سکیورٹی برانچ اور سپیشل برانچ کے ملازمین تدفین ہونے تک اعلیٰ افسران کوپل پل کی رپورٹ دیتے رہے جبکہ جہا نیا ں پو لیس ایس ایچ او وا قعہ کے با رے میں صحا فیو ں نے پو چھا تو لا علمی کا اظہا ر کر تے رہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...