بھارت نے براہمداغ بگٹی کی سیاسی پناہ کی درخواست کی تصدیق کردی،درخواست بھارت کی بلوچستان میں مداخلت کا کھلا ثبوت ہے:پاکستان

بھارت نے براہمداغ بگٹی کی سیاسی پناہ کی درخواست کی تصدیق کردی،درخواست بھارت ...
بھارت نے براہمداغ بگٹی کی سیاسی پناہ کی درخواست کی تصدیق کردی،درخواست بھارت کی بلوچستان میں مداخلت کا کھلا ثبوت ہے:پاکستان

  



اسلام آباد(اے پی پی) بھارت نے براہمداغ بگٹی کی سیاسی پناہ کی درخواست کی تصدیق کردی دوسری جانب پاکستان کا کہنا ہے کہ درخواست بھارت کی بلوچستان میں مداخلت کا کھلا ثبوت ہے۔

بھارت نے تصدیق کی کہ اسے قوم پرست بلوچ رہنما براہمداغ بگٹی کی سیاسی پناہ کی درخواست موصول ہوئی ہے جس پر غور کیا جارہا ہے۔بھارتی میڈیا کے مطابق براہمداغ بگٹی نے 4 روز قبل جنیوا میں بھارتی قونصلیٹ میں سیاہ پناہ کی درخواست جمع کرائی جسکے بعد درخواست وزارت خارجہ کے حوالے کردی گئی جبکہ بھارت کے پاس کسی کو سیاسی پناہ دینے کی کوئی واضح پالیسی نہیں ہے،براہمداغ بگٹی کی درخواست کے بعد صورتحال پیچیدہ ہوگئی۔

دوسری جانب بھارت وزارت داخلہ کے حکام نے سیاہ پناہ کی درخواستوں کے حوالے سے 1959 کا ریکارڈ نکال کر چھان بین شروع کردی ہے کیوں کہ جواہر لعل نہرو حکومت نے 1959 میں تبت کے روحانی پیشوا دالائی لاما کو پہلی مرتبہ سیاسی پناہ دی تھی۔ حکام کا کہنا ہے کہ براہمداغ بگٹی کو سیاسی پناہ دینے کا معاملہ اعلی سطح کا سیاسی فیصلہ ہے تاہم انہیں سیاسی پناہ دینے کے لئے پیپر ورک شروع کردیا گیا ہے۔

ادھر پاکستان کے دفترخارجہ کے ترجمان نفیس ذکریا نے کہابھارتی تصدیق پر ردعمل دیا تھا کہ براہمداغ بگٹی کی بھارتی شہریت کی ۔دریں اثنا وفاقی وزیر دفاع خواجہ محمد آصف نے کہا ہے کہ بھارت کی طرف سے براہمداغ بگٹی کو پناہ دینا ایک ریاست کی طرف سے دہشتگرد کو پناہ دینے کے مترادف ہوگا۔ جمعرات کو اپنے ایک ٹویٹ پیغام میں وزیر دفاع نے کہا کہ بھارت براہمداغ بگٹی کو پناہ دے کر دہشتگردی کا سرکاری سرپرست بن رہا ہے ۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں