بھارت سے غیرمشروط مذاکرات کیلئے تیار ،جنگ کیخلاف ہیں ،سرتاج عزیز

بھارت سے غیرمشروط مذاکرات کیلئے تیار ،جنگ کیخلاف ہیں ،سرتاج عزیز
بھارت سے غیرمشروط مذاکرات کیلئے تیار ،جنگ کیخلاف ہیں ،سرتاج عزیز

  



اسلام آباد (صباح نیوز) مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ کشمیر ایشو اجاگر ہونے سے بھارت پر دباو¿ پڑیگا اور وہ مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے مذاکرات پر مجبور ہو جائیگا۔بھارت سے غیرمشروط مذاکرات کیلئے تیارہیں،جنگ کیخلاف ہیں۔ تاہم بھارتی جارحیت کا جواب دینے کی صلاحیت اور عزم رکھتے ہیں۔ پاک فوج وطن عزیز کی سلامتی کیلئے پوری طرح تیار ہے۔ ایک نجی ٹی وی کے پروگرام میں اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا ہم نے نیویارک میں وزیراعظم نے مسئلہ کشمیر کو اچھی طرح اجاگر کیا۔ پوری دنیا مانتی ہے کشمیر متنازعہ ایشو ہے۔پوری دنیا کی طرح بھارت کو اچھا پیغام جائے گا اور وہ دباو¿ میں آ کر مسئلے کے حل کے لئے مذاکرات پر مجبور ہو جائے گا۔

ممکنہ بھارتی جارحیت، پاکستان نے منہ توڑ جواب دینےکی تیاری مکمل کرلی،آپریشنل منصوبہ بن گیا، ہدف بھی نشانے پر،تفصیلات کیلئے یہاں کلک کریں

انہوں نے کہا نیویارک میں وزیراعظم سے مختلف ممالک کے 8 سربراہوں نے ملاقاتیں کیں جن میں وزیراعظم نے انہیں مسئلہ کشمیر اور مقبوضہ کشمیر کی حالیہ صورتحال سے آگاہ کیا۔ ان سربراہوں میں امریکہ برطانیہ چین سکیورٹی کونسل کے ممبر ہیں اور دیگر 5 میں جاپان، ترکی، ایران، نیوزی لینڈ اور سعودی عرب تھے۔ ان سب نے مقبوضہ کشمیر کے حالات پر افسوس کا اظہار کیا اور مسئلے کے حل کے لئے فریقین پر زور دیا اور کہا کہ کشیدگی بڑھ رہی ہے۔ اس پر بات چیت ہونی چاہئے تاکہ مسئلہ کشمیر حل ہو۔ انہوں نے کہاوزیراعظم نے جنرل اسمبلی میں اپنے خطاب میں کشمیر کے ایشو کو دہرایا اور بنیادی بات یہ کی کہ جب تک کشمیر کا مسئلہ حل نہیں ہوگا خطے کا امن بحال نہیں ہو سکتا اور امن بحال کرنے کیلئے مذاکرات ضروری ہیں اور مذاکرات پاکستان پر احسان نہیں بلکہ یہ دونوں ملکوں کے مفاد میں ہے کہ بات چیت کے ذریعہ مسئلہ حل ہو سرتاج عزیز نے کہا بھارت کے اندر بھی بھارتی حکومت پر دباﺅ بڑھ رہاہے۔بھارت میں نئی نسل مسئلہ کشمیر پر سراپا احتجاج ہے۔انہوں نے کہا کہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے بارے میں ہم نے ہیومن رائٹس کمیشن کو بھی لکھا ہے او آئی سی نے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا ہے اس سے بھی بھارت پر دباﺅ بڑھے گا۔نیو یارک میں سرکاری ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے سرتاج عزیز نے کہا وزیراعظم کے دورے میں دو اہم امور پربات چیت کی جارہی ہے ان میں کشمیر کی صورتحال اور پاک بھارت تعلقات کے علاوہ نیو کلیئر سپلائرز گروپ میں پاکستان کی رکنیت کے معاملات شامل ہیں۔انہوں نے کہا نیویارک میں مختلف وزرائے خارجہ سے ملاقات میں کشمیر کی صورتحال کو اجاگر کیا گیا ہے اب تک کافی کامیابی سے بات چیت ہوئی ہے۔

مزید : قومی /اہم خبریں


loading...