قربانی کی کھالوں اور بھتے کی ر قم سے الطاف کے لندن، دبئی میں درجنوں بنگلے، مکینوں میں راشن سپلائی کیلئے دو گاڑیاں بھی مختص

قربانی کی کھالوں اور بھتے کی ر قم سے الطاف کے لندن، دبئی میں درجنوں بنگلے، ...

  



لندن (ویب ڈیسک) متحدہ کے بانی نے پارٹی کے چند چوٹی کے رہنماﺅں پر اپنی گرفت مضبوط رکھنے کیلئے صرف لندن میں 25 گھر خرید رکھے ہیں، متحدہ بانی نے یہ گھر اپنے ان تمام کار خاص افراد کو فراہم کررکھے ہیں جو روزانہ الطاف حسین کے پاس حاضری دیتے ہیں۔ یہ تمام لوگ ان گھروں کا کوئی کرایہ نہیں دیتے اور نہ ہی وہ کسی قسم کا کوئی بزنس یا ملازمت کرتے ہیں، ان کے بیوی بچوں اور ان کا خرچ چلانے، تمام بلز اور نان و نفقہ کیلئے سب خرچ متحدہ کی طرف سے فراہم کیا جاتا ہے۔

روزنامہ خبریں کے مطابق پارٹی کے ایک کارکن نے بتایا کہ ان سب گھروں میں مہینے کا راشن پہنچانے کیلئے بھی دو بڑی سیون سیٹر گاڑیاں مختص کی گئی تھیں جو یہ ڈیوٹی تواتر کے ساتھ انجام دیتی تھیں۔ ان میں سے ایک گاڑی میں خود ڈرائیو کرتا رہا ہوں اور یہ تمام گھر جو لندن کے مختلف علاقوں میں خریدے گئے وہ کچھ تو متحدہ کے بانی کی ذاتی اور کچھ متحدہ کے ٹرسٹ کی ملکیت ہیں لیکن ٹرسٹ میں موجود تمام ا ملاک کا اختیار بھی الطاف حسین کے پاس ہے۔

روزنامہ پاکستان کی خبریں اپنے ای میل آئی ڈی پر حاصل کرنے اور سبسکرپشن کیلئے یہاں کلک کریں

ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ تمام جائیدادیں اور گھر کراچی سے آنے والی رقوم سے خریدے گئے جو گزشتہ دو دہائیوں سے بھتوں، چندوں، قربانی کی کھالوں اور دیگر ذرائع سے اکٹھی ہوئیں اور ان کا بڑا حصہ لندن بھجوادیا جاتا اور ان کی کیش رقم کو کراچی سے لندن پہنچانے کیلئے تقریباً پندرہ کے قریب خواتین کیریئر جو متحدہ کی کارکن بھی ہیں موجود ہیں جو مسلسل کراچی سے لندن اور پھر لندن سے کراچی کے چکر لگاتی تھیں۔

اخبار کے ذرائع کے مطابق ان بڑی رقوم سے دبئی میں بھی درجنوں بنگلے خریدے گئے ، جنہیں پاکستان اور لندن کیر ابطہ کمیٹی کے بڑوں کو تقسیم کیا گیا۔ متحدہ کا ایک اور منحرف لیڈر سلیم شہزاد کا اختلاف بھی رقوم اور بنگلوں کی تقسیم پر ہی ہوا کیونکہ وہ سمجھتا ہے کہ اس لوٹ کے مال میں سے جو اس کا حصہ بنتا ہے وہ اسے نہیں ملا۔

مزید : برطانیہ


loading...