شاہدرہ کی لومیرج کرنے والی لڑکی ساہیوال میں مبینہ قتل، شوہر پر مقدمہ

شاہدرہ کی لومیرج کرنے والی لڑکی ساہیوال میں مبینہ قتل، شوہر پر مقدمہ
شاہدرہ کی لومیرج کرنے والی لڑکی ساہیوال میں مبینہ قتل، شوہر پر مقدمہ

  



لاہور (ویب ڈیسک) شاہدرہ کے علاقہ کی رہائشی لو میرج کرنے والی 25 سالہ لڑکی کو مبینہ طور پر موت کے گھاٹ اتاردیا گیا۔ اس کی موت کو اتفاقیہ قرار دینے پر لواحقین نے مقتولہ کے شوہر کے خلاف اغوا اور قتل کا مقدمہ درج کرادیا۔ بتایا گیا ہے کہ شاہدرہ کے علاقہ ملک پارک کی رہائشی نادیہ ساہیوال کے رہائشی قاسم نامی نوجوان سے لومیرج کرکے ساہیوال منتقل ہوگئی۔

روزنامہ پاکستان کی تازہ ترین اور دلچسپ خبریں اپنے موبائل اور کمپیوٹر پر براہ راست حاصل کرنے کیلئے یہاں کلک کریں‎

لڑکی کےوالدین کو اس کی وفات کی خبر ملی تو انہوں نے تھانہ شاہدرہ میں بیٹی کے اغوا اور قتل کا مقدمہ درج کراتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ ایک ماہ قبل ان کی بیٹی نادیہ کو قاسم نے ورغلا کر اغوا کیا اور شادی رچائی اور اب اسے قتل کردیا ہے۔ شاہدرہ پولیس کے مطابق ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال ساہیوال کی رپورٹ کی روشنی میں نادیہ بیمار تھی اور گردوں کی بیماری میں مبتلا تھی جس کی وجہ سے جاں بحق ہوئی۔ سسرالیوں نے اس کی لاش ایک پرائیویٹ ایمبولینس کے ذریعے میکے بھجوادی۔ پولیس کے مطابق مختلف پہلوﺅں پر تفتیش کررہے ہیں۔ اصل حقائق پوسٹ مارٹم رپورٹ اور تفتیش کے بعد سامنے آئیں گے۔

مزید : لاہور