پاکستان رواں سال مزید 600 افغان طلبا کو میڈیکل، انجینئرنگ سمیت دیگر شعبوں میں تعلیمی وظائف دے گا

پاکستان رواں سال مزید 600 افغان طلبا کو میڈیکل، انجینئرنگ سمیت دیگر شعبوں میں ...
پاکستان رواں سال مزید 600 افغان طلبا کو میڈیکل، انجینئرنگ سمیت دیگر شعبوں میں تعلیمی وظائف دے گا

  



اسلام آباد (صباح نیوز) وزیراعظم کے خصوصی پروگرام کے تحت پاکستان رواں سال مزید 600 افغان طلبا کو میڈیکل، انجینئرنگ سمیت دیگر شعبوں میں تعلیمی وظائف دے گا۔ 2009ئ سے جاری اس پروگرام کے تحت 2129 افغان طلباءپہلے سے ہی پاکستان کے تعلیمی اداروں میں تعلیمی وظائف کے تحت تعلیم حاصل کر رہے ہیں جبکہ آئندہ سال اسی پروگرام کے تحت پی ایچ ڈی اور ماسٹر سطح کے پروگرامز بھی شروع کئے جائیں گے۔ ذرائع کے مطابق ابتدائی طو رپر 1000 طلبائکو پاکستان کے تعلیمی اداروں میں تعلیم کے حصول کے لئے سکالر شپس فراہم کرنے کا منصوبہ تھا بعدازاں ان سکالر شپس کی تعداد بڑھا کر 3000 کر دی گئی۔ اس پروگرام کے تحت افغان طلبا کے تمام تعلیمی اخراجات حکومت پاکستان برداشت کر رہی ہے جس میں ٹیوشن فیس، کتابوں، سٹیشنری، رہائش اور روزمرہ کے اخراجات شامل ہیں۔ اس پراجیکٹ کے تحت اب تک 2129 افغان طلبا کو سکالرشپس فراہم کئے جا چکے ہیں جبکہ رواں سال مزید 600 افغان طلباءکو وظائف دیئے جائیں گے جس کے لئے مارچ 2016ء میں ہائرایجوکیشن کمیشن اور وزارت منصوبہ بندی کے نمائندوں پر مشتمل وفد افغان طلباءکا ٹیسٹ لینے کے لئے کابل گیا تھا جہاں پاکستانی سفارتخانے میں وفد نے 7000 طلباءکا ٹیسٹ لیا تھا جس کے بعد مختلف یونیورسٹیوں کے پروفیسرز پر مشتمل طلباءنے 600 طلباءکو منتخب کیا بعدازاں 23 طلباءکسی وجہ سے سکالر شپس سے فائدہ نہ اٹھا سکے اور اب 577 طلباءیکم اکتوبر سے ملک کی مختلف یونیورسٹیوں، میڈیکل و ڈینٹل کالجوں میں اپنی تعلیم شروع کریں گے۔ ہائرایجوکیشن کمیشن کے مطابق افغان طلباءکو ایم بی بی ایس، بی ڈی ایس، انجینئرنگ، سوشل سائنسز، میڈیا جرنلزم، مینجمنٹ سائنسز اور دیگر شعبوں میں داخلے فراہم کئے جائیں گے۔ ان طلباءکو پاکستان کے نظام نظام تعلیم، ماحول اور زبان سے آگاہی پیدا کرنے کے لئے 6 ماہ کا زیرو سمسٹر پڑھایا گیا ہے۔ زیرو سمسٹر کے لئے ان طلباءکو یونیورسٹی آف مینجمنٹ سائنسز پشاور، کامسیٹس لاہور، کامسیٹس ایبٹ آباد اور نمل یونیورسٹی اسلام آباد میں تعلیم فراہم کی گئی اور ان کے تعلیم اور رہائش کے تمام اخراجات بھی برداشت کئے گئے۔ ایچ ای سی نے افغان طلباءکے فوری رابطے اور ان کے مسائل کے حل کے لئے اسلام آباد میں پاکستان الومنائی ایسوسی ایشن کا ادارہ قائم کیا ہے جہاں تمام نئے اور پرانے افغان طلباءسوشل نیٹ ورک کے ذریعے ایچ ای سی سے مسلسل رابطے میں رہتے ہیں۔ چیئرمین ایچ ای سی ڈاکٹر مختار احمد کا کہنا ہے کہ یہ پروگرام حکومت پاکستان کی افغان بھائیوں کے لئے اہم تعلیمی امداد ہے۔ افغان طلباءتعلیم کے حصول کے بعد اپنے ملک کی تعمیر و ترقی میں اہم کردار ادا کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ افغان طلباءکے لئے بہترین انتظامات کئے گئے ہیں۔ پہلے افغان طلباءکو یہ وظائف بین الصوبائی رابطہ کی وزارت کے تحت دیئے جاتے تھے اب ہائر ایجوکیشن کمیشن یہ ذمہ داری ادا کر رہا ہے۔

مزید : اسلام آباد


loading...