چین اقتصادی راہداری منصوبہ ‘عالمی سرمایہ کاروں کا رخ پاکستان کی طرف ہوگیا ، شازیہ سلیمان

چین اقتصادی راہداری منصوبہ ‘عالمی سرمایہ کاروں کا رخ پاکستان کی طرف ہوگیا ، ...

لاہور(کامرس رپورٹر)ویمن چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری لاہور ڈویژن کی صدر شازیہ سلیمان نے کہا ہے کہ پاک چین آزاد تجارتی معاہدہ پاکستان میں معاشی انقلاب ،چین کی منڈیوں تک باآسانی رسائی ،زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافہ اور تجارتی خسارہ کم ہونے سے غیر ملکی سر مایہ کاری بڑھے گی جس کے دوررس مثبت نتائج حاصل ہونگے تاہم ضرورت اس امر کی ہے کہ وزارت تجارت کاروبای خواتین کے لیے ایکسپورٹ پالیسی میں نرمی لاتے ہوئے ریلیف دے تاکہ کاروباری خواتین بھی پاک چین آزاد تجارتی معائدہ سے بھرپور فائدہ اٹھاتے ہوئے ملکی معیشت میں اپنا مثبت کردار ادا کر سکیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ویمن چیمبر میں اجلاس کی صدارت کر تے ہوئے کیا جبکہ اس موقع پر ویمن چیمبر کی فاؤنڈر و سینئر رہنماء ڈاکٹر شہلا جاوید ،قیصرہ شیخ ، شازیہ بخاری ، تہمینہ بخاری،آسیہ ،فلاحت و دیگر مو جو دتھیں۔ شازیہ سلیمان نے کہا کہ وفاقی حکومت کی مثبت کاوش کے باعث اب پاکستانی اشیاء چین کی اہم منڈیوں میں فروخت کیلئے دستیاب ہونگی جس سے نہ صرف برآمد کنندگان فائدہ اٹھائیں گے بلکہ پاکستانی انڈسٹری کا پہیہ بھی گھومے گا ۔انہوں نے کہا کہ چین اقتصادی راہداری منصوبہ و منصوبہ کی راہ میں انڈسٹریل زونز کے قیام سے دنیا بھر کے سرمایہ کاروں کا رخ پاکستان کی طرف ہوگیا ہے۔

اور دنیا بھر سے بڑی بڑی اور معروف کمپنیاں پاکستان میں سرمایہ کاری کی منصوبہ بندی کررہی ہیں لہذا وزارت تجارت سرمایہ کاروں کیلئے بہترین ماحول کی فراہمی کو یقینی بنائے۔ شازیہ سلیمان نے مطالبہ کیا ہے کہ وفاقی حکومت کمرشل و گھریلو صارفین کومہنگی بجلی کے ساتھ ساتھ اضافی الیکٹرسٹی ڈیوٹی، پی ٹی فیس، انکم ٹیکس،جنرل سیلز ٹیکس،ایکسٹرا ٹیکس، نیلم جہلم سرچارج ٹیکس کی شرح میں پچاس فیصد تک کمی کرے تاکہ پاکستان کو صنعتی لحاظ سے ایشیاء کا ٹائیگر بنانے کا خواب شرمندہ تعبیرہو سکے۔

مزید : کامرس