ٹیپا میں 208گھوسٹ ملازم برطرف ، نوٹیفکیشن جاری

ٹیپا میں 208گھوسٹ ملازم برطرف ، نوٹیفکیشن جاری

لاہور(جاوید اقبال)ٹیپا میں 208 گھوسٹ ورک چارج ملازمین پکڑے گئے ہیں یہ ملازم مختلف افسروں کی طرف سے کاغذوں میں رکھے گئے تھے۔تحقیقات میں کاغذی جمع تفریق کر کے جعلی ملازمین ثابت ہونے پر ڈائریکٹر ایڈمن اینڈ فنانس نے ان ملازمین کو فوری طور پر بر طرف کر دیا ہے۔ڈائریکٹر کے اس اقدام سے ٹیپا کے سرکاری خزانہ کو اٹھارہ لاکھ ماہانہ کا فائدہ پہنچے گا گھوسٹ ملازمین کی بر طرفی کا فوری طور پر نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا ہے۔ٹیپا میں 277 ورک چارج ملازمین سالہا سال سے رکھے گئے تھے جو مختلف افسروں یونین لیڈروں اور مختلف بعض سیاسی شخصیات کی طرف سے رکھوائے گئے تھے۔ڈائریکٹر ایڈمن اینڈ فنانس عرفان احمد کو چیف انجینئر سیف الرحمان کی طرف سے تحقیقات کا حکم دیا گیا جس پر ڈائریکٹر ایڈمن نے ایک تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دی کمیٹی کے سینئر ممبر نے انکشاف کیا کہ ان میں سے108ملازمین ایسے تھے جو کاغذوں میں درج تھے اور ان کی تنخواہیں ان کی جعلی سائن کر کے کوئی اور لے جاتا ہے جبکہ ایسے تھے جو کبھی دفتر نہیں آئے اور کاغذوں میں ماہانہ اٹھارہ لاکھ روپے تنخواہ کئی سالوں سے وصول کر رہے تھے اس طرح جعلسازی سے ان ملازمین کے نام پر افسر کروڑوں روپیہ ہڑپ کر گئے۔ذرائع نے بتایا ہے کہ کمیٹی نے معاملات ڈی جی کے سامنے پیش کیے۔اور گزشتہ روز ان ملازمین کو بر طرف کر دیا گیا اس حوالے سے ڈائریکٹر عرفان احمد سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ اس اقدام سے ٹیپا کو ماہانہ اٹھارہ لاکھ کا فائدہ ہو گا اب صرف59 ورک چارج ملازمین ہیں جن کو ریگولر کرنے کے لیے سمری اتھارٹی کو بھجوائی جا رہی ہے آئندہ سے گھوسٹ ملازمین سے محکمے کو بچانے کے لیے حاضری کا نظام بائیو میٹرک ہو گا جس کے لیے تمام متعلقہ افسران کو ہدایات جاری کر دی گئی ہیں انہوں نے کہا کہ مزید تحقیقات بھی جاری ہیں۔جبکہ چیف انجینئر سیف الرحمان سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ مثبت اور بہتر انتظامات کیے گئے ہیں جس سے ٹیپا بہت جلد اپنے پاؤں پر کھڑا ہو جائے گا ۔

ط

مزید : میٹروپولیٹن 1