شریف فیملی کوقانونی ٹیم کا احتساب عدالت میں پیش ہونے کا مشورہ

شریف فیملی کوقانونی ٹیم کا احتساب عدالت میں پیش ہونے کا مشورہ

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک )شریف خاندان کی قانونی ٹیم کے سربراہ خواجہ حارث نے انہیں احتساب عدالت کے روبرو پیش ہونے کا مشورہ دیا ہے۔ذرائع کے مطابق شریف فیملی نیب ریفرنسز میں احتساب عدالت کے روبرو پیش ہونے کا اب تک فیصلہ نہیں کرسکی ،سابق وزیر اعظم نواز شریف، حسن ، حسین ، مریم نواز اور کیپٹن (ر) محمد صفدر کو احتساب عدالت نے 26 ستمبر کو طلب کر رکھا ہے۔ذرائع کے مطابق نیب ریفرنس میں سابق وزیراعظم کے وکیل خواجہ حارث نے شریف فیملی سے لندن میں کئی مشاورتی اجلاس کئے جس کے دوران انہوں نے یہی مشورہ دیا کہ شریف فیملی کو احتساب عدالت کے سامنے پیش ہونا چاہیے۔خواجہ حارث لندن سے گزشتہ روزلاہور واپس پہنچے اور وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف لندن جا کر اس معاملے پر سابق وزیراعظم نواز شریف سے مزید مشاورت کریں گے۔ذرائع کے مطابق لندن میں ہونیوالی شریف فیملی کی ملاقات کے دوران حتمی فیصلہ کیا جائے گا کہ احتساب عدالت کے سامنے پیش ہونا ہے یا نہیں،تاہم شریف فیملی کا ماننا ہے کہ ان کا شفاف ٹرائل نہیں کیا جارہا اور اسی وجہ سے انہوں نے احتساب عدالت کے سامنے پیش ہونے کا اب تک فیصلہ نہیں کیا۔

قانونی ٹیم مشورہ

مزید : صفحہ اول