چیف سکیورٹی افسر لاہور کو سکیورٹی کے نام پر بندراستے کھولنے کا حکم

چیف سکیورٹی افسر لاہور کو سکیورٹی کے نام پر بندراستے کھولنے کا حکم

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے چیف ٹریفک آفیسر لاہوررائے اعجاز کو ان کی رہائشگاہ کے اردگرد سکیورٹی کے نام پر بند کی گئی گلیاں اور سڑکیں فوری کھولنے کا حکم د ے دیا ہے ،عدالت نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ معمولی افسروں کا یہ حال ہے تو پھر اعلیٰ افسروں کے گھروں کے تحفظ کے لئے تو شہرکے شہر بند کرنا پڑیں گے ۔ جسٹس شاہد وحید نے مرزا ضیاء الرحمن ایڈووکیٹ کی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ چیف ٹریفک آفیسر رائے اعجاز 35ستلج بلاک میں رہائش پذیر ہیں، ان کی رہائشگاہ کی حفاظت کے لئے پولیس نے قریبی گلیاں اور سڑکیں سکیورٹی کے نام پر بیئریئرز لگا کر بند کر دی ہیں جس سے علاقہ مکینوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ، عدالتی حکم پر چیف ٹریفک اافیسر رائے اعجاز عدالت میں پیش ہوئے اور موقف اختیار کیا کہ رہائش گاہ کے ارد گرد سیکورٹی نہیں لگائی اور نہ ہی علاقے کو نو گو ایریا بنایا ہے، سکیورٹی کی وجہ سے چند مقامات پر بیریئرز لگائے ہیں، عدالت نے سی ٹی او کو حکم دیا کہ کہ ان کی رہائشگاہ کے اردگرد جتنی بھی رکاوٹیں ہیں وہ ختم کی جائیں اور عوام کے لئے راستے کھولے جائیں، عدالت نے سی ٹی او لاہورکو 25ستمبر تک تحریری جواب داخل کرانے کی ہدایت کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ معمولی افسروں کا یہ حال ہے تو پھراعلیٰ افسروں کے گھروں کے تحفظ کے لئے تو شہر کے شہر بند کرنا پڑیں گے ۔

مزید : صفحہ آخر