انتخابی اصلاحات بل سینیٹ سے منظور،نواز شریف کے پارٹی صدر بننے کی راہ ہموار

انتخابی اصلاحات بل سینیٹ سے منظور،نواز شریف کے پارٹی صدر بننے کی راہ ہموار

ٍ اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک 228 نیوز ایجنسیاں) سینیٹ نے قومی اسمبلی سے منظور شدہ انتخابی اصلاحات کا بل2017ء اعتزاز احسن کی ترمیم کو مسترد کرکے منظور کرلیا جس کے بعد نوازشریف کے پارٹی سربراہ بننے کے لیے راہ ہموار ہوگئی ہے۔سینیٹ کا اجلاس چیرمین رضا ربانی کی سربراہی میں ہوا جس میں انتخابی اصلاحات کے بل کو منظور کیا گیا تاہم ایم این اے نہ ہونیکی صورت میں پارٹی سربراہ نہ بننے کی اعتراز احسن کی ترمیم مسترد کردی گئی۔ شق 203 میں پاکستان پیپلز پارٹی کی جانب سے پیش کی جانے والی ترمیم صرف ایک ووٹ سے مسترد کی گئی، ترمیم کے حق میں 37 ووٹ پڑے جبکہ 38 سینیٹرز نے اس ترمیم کی مخالفت میں رائے دی، اس شق میں پیپلز پارٹی کی ترمیم مسترد ہونے کے بعد اب نوازشریف نااہلی کے باوجود ایک مرتبہ پھر پارٹی کے صدر بن سکتے ہیں۔ اعتزاز احسن کی جانب سے پیش کی گئی ترمیم میں مؤقف اختیار کیا گیا تھا کہ اگرکوئی ایم این اے نہیں بن سکتا تووہ پارٹی سربراہ بھی نہیں بن سکتا جب کہ کوئی دہشتگردی کرنے والااورشہریت چھوڑنے والا بھی پارٹی سربراہ نہیں بن سکتا۔بل کے مطابق کسی شہری کو سیاسی جماعت سے وابستگی کا اختیار ہوگا، شہری جوسرکاری ملازمت میں نہ ہو، اسے اختیارہوگا کہ وہ کوئی سیاسی جماعت بنائے۔بل کے مطابق الیکشن کمیشن 90 دن کے اندر الیکشن اخراجات کی جانچ پڑتال کرسکے گا، مقررہ وقت میں پڑتال نہ کی گئی تو جمع کرائے گئے اخراجات درست تسلیم کیے جائیں گے جب کہ اثاثوں اور ذمے داریوں کی تفصیلات غلط ثابت ہوئیں تو 120 دن کے اندرکارروائی ہوگی۔یادرہے کہ قومی اسمبلی پہلے ہی الیکشن اصلاحات بل 2017ء کی پہلے ہی منظوری دے چکی ہے اور اب سینٹ سے بھی منظور ہوگیا، صدر مملکت کے دستخطوں کے بعد یہ بل بھی قانون کا حصہ بن جائے گا۔اعتزاز احسن نے کہا کہ حکومت پارٹی ایکٹ آرڈر تبدیل کررہی ہے جو غلط ہے۔شق 203 میں ترمیم کے لیے جب پہلے ووٹنگ کرائی گئی تو کچھ حکومتی نمائندے ایوان میں موجود نہیں تھے جس پر دوبارہ ووٹنگ کرائی گئی۔خیال رہے کہ سینیٹ میں پیپلزپارٹی کے ارکان کی تعداد 26 اور مسلم لیگ (ن) کے ارکان کی تعداد 27 ہے۔شق 203 میں ترمیم سے قبل وفاقی وزیر سعد رفیق ایوان میں سرگرم نظر آئے اور حکومتی ارکان کی گنتی پورے کرانے لگے جس پر اپوزیشن ارکان نے احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی وزیر ایوان کو پریشان کررہے ہیں۔

سینیٹ۔ بل

مزید : کراچی صفحہ اول