مبینہ انصاف نہ ملنے پر محنت کش کی خود سوزی کا واقعہ‘ آئی جی نے تھانہ اٹھارہ ہزاری کے 2 سابق ایس ایچ او سمیت 5 پولیس اہلکار برخاست کر دیئے

مبینہ انصاف نہ ملنے پر محنت کش کی خود سوزی کا واقعہ‘ آئی جی نے تھانہ اٹھارہ ...

گڑھ مہاراجہ (نامہ نگار)مبینہ انصاف نہ ملنے پر محنت کش کی خود سوزی کا واقعہ،آئی جی پولیس پنجاب نے انکوائری رپورٹ کی روشنی میں تھانہ اٹھارہ ہزاری ضلع جھنگ کے دو سابق (بقیہ نمبر52صفحہ7پر )

ایس ایچ اوز سمیت پانچ پولیس ملازمین کو نوکری سے فارغ کر دیا وزیر اعلی میاں شہباز شریف نے اس واقعہ کا نوٹس لیا تھا آئی جی پولیس کیپٹن (ر)عارف نواز نے جن پولیس ملازمین کو نوکری سے برخاست کیا ہے ان میں اٹھارہ ہزاری کے دو سابق ایس ایچ او غلام عباس سگل،احسان نواز ،سب انسپکٹر نواز نول،غلام جعفر اور محرر نور اکبر شامل ہیں نواحی علاقہ چک 5مرلہ سکیم موضع جبوآنہ درگاہی شاہ کے محنت کش صفدر کلاسن نے بیوی سے مبینہ زیادتی اور گھر سے چوری کے مقدمہ نمبر357میں انصاف نہ ملنے اور ملزمان کو حراست میں لیکر بھاری رشوت لیکر چھوڑ دینے پر 23اگست کو تھانہ میں ایس ایچ او کے سامنے پیٹرول چھڑک کر خود کو آگ لگا لی تھی جس کے تین دن بعد اس کا انتقال ہو گیا صفدر کے رشتہ داروں اور اہل علاقہ نے اس پر چوک میں شدید احتجاج کیا وزیر اعلی پنجاب کے نوٹس پر ڈی ایس پی طاہر کچھی ایس ایچ او عباس سگل اور تفتیشی نواز نول کو معطل کر کے آر پی او سرگودھا ذوالفقار حمیدکی سربراہی میں انکوا ئر ی کمیٹی بنائی گئی جس نے مقدمہ مذکور کے اندراج اور تفتیش میں مذکورہ پانچ ملازمین کو غفلت اور ناہلی کا مرتکب قرار دیا ہے جبکہ ڈی ایس پی کو بری الذمہ کر دیا ہے اور ان کی دوبارہ تعیناتی سٹی سرکل جھنگ کر دی گئی ہے دوسری طرف مقدمہ مذکور کی انکوائری بھی تیزی سے جاری ہے جو چار رکنی تفتیشی ٹیم کر رہی ہے ملوث تینوں ملزمان نامکمل چالان پر جیل میں ہیں جن کا ڈی این اے ٹیسٹ کروایا گیا جبکہ پولیس محنت کش کی بیوہ کو بھی گزشتہ روز اس ٹیسٹ کیلئے لاہور لے گئی اطلاعات کے مطابق تفتیشی ٹیم کو ابھی تک اس مقدمہ کے صحیح ہونے کے ٹھوس شواہد نہیں ملے ڈی این اے ٹیسٹ کی رپورٹ آنے پر ہی کوئی حتمی نتیجہ مرتب کیا جائے گا

مزید : ملتان صفحہ آخر