کراچی میں ٹریفک کے مسائل میں اضافہ ہو رہا ہے :عمران یعقوب منہاس

کراچی میں ٹریفک کے مسائل میں اضافہ ہو رہا ہے :عمران یعقوب منہاس

کراچی (کرائم رپورٹر) ڈی آئی جی ٹریفک عمران یعقوب نے کہا ہے کہ ترقیاتی کاموں کی وجہ سے شہر میں ٹریفک جام کے مسائل میں اضافہ ہورہا ہے ۔ٹریفک انجینئرنگ سسٹم ٹھیک نہیں کیا گیا تو حالات مزید خراب ہوسکتے ہیں ۔تو شہر ی قانون کو وہ اہمیت نہیں دیتے ہیں جو ان کو دینی چاہیے ۔ہیلمٹ کے خلاف مہم کا مقصد شہریوں کو تنگ کرنا نہیں ہے ۔ہیلمٹ مہم کے دوران 45698 سے زائد چالان جبکہ 9616 موٹرسائیکلیں بند کی گئیں۔اس سال 166287 زائد گاڑیوں کے چالان ہوئے۔چالان کی مد میں 385645450 روپے جمع کئے گئے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو گارڈن ٹریفک ہیڈ کوارٹر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔پریس کانفرنس کے دوران عمران یعقوب منہاس سے ٹریفک سے متعلق شکایتوں کے انبار لگادیئے ۔انہوں نے کہا کہ شہر میں کئی مقامات پر سیوریج لائنیں ڈالی جارہی ہیں یاروڈ کی کارپیٹنگ ہورہی ہے ۔سیوریج اور کارپٹینگ کا مسئلہ حل نہیں ہوا تو روڈ مزید خراب ہوں گے ۔ترقیاتی کاموں کی وجہ سے ایسٹ، سٹی، سینٹرل اور ویسٹ میں ٹریفک جام کا مسئلہ پیدا ہورہا ہے ۔کوشش کررہے ہیں کہ عوام کی توجہ اس جانب مبذول کرائیں کہ وہ قوانین پر عمل کریں ۔انہوں نے کہا کہ کراچی میں پارکنگ کا ہوا بنالیا گیا ہے ۔شہر میں کئی ہائی رائس بلڈنگز کی پارکنگ استعمال نہیں کی جارہی ہیں ۔100سے زائد ایسی عمارتوں کی پارکنگز کو استعمال کیا جائے تو کافی حد تک مسئلہ کم ہوگا۔پارکنگ کے نظام کو بہتر بنانے کے لیے اوپن ٹینڈر ز جاری کیے جائیں گے اور اس حوالے سے شفافیت کو یقینی بنایا جائے گا ۔پارکنگ مافیا کے خلاف بھی اقدامات کررہے ہیں ۔تمام اداروں کو غیر قانونی پارکنگ کے خاتمے کے لیے ایک پیج پر آنا ہوگا ۔انہوں نے کہا کہ شہر میں 40لاکھ سے زائد گاڑیاں ہیں ۔ہر ماہ ایک ہزارموٹرسائیکلیں رجسٹرڈ ہو کر سڑکوں پر آرہی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ شہر میں 88 ٹریفک سیکشنز ہیں، جبکہ 40 سے زائد پر الیکٹرونک چالان سسٹم ہے۔شہری ہیلمٹ کا استعمال کرتے ہیں اور نہ ہی کاغذات اپنے ساتھ رکھتے ہیں اور سگنل تو بہت آرام سے توڑ دیتے ہیں۔ہیلمٹ کے خلاف مہم کا مقصد شہریوں کو تنگ کرنا نہیں ہے ۔شہر میں حادثات میں سب سے زیادہ نقصان موٹرسائیکل سوار جو ہیلمٹ نہیں پہنتے انکا ہوتا ہے ۔ہیلمٹ مہم کے دوران 45698 سے زائد چالان جبکہ 9616 موٹرسائیکلیں بند کی گئیں۔اس سال 166287 زائد گاڑیوں کے چالان ہوئے۔چالان کی مد میں 385645450 روپے جمع کئے گئے۔انہوں نے کہا کہ داؤدی بوہرہ جماعت کے روحانی پیشوا اس وقت شہر میں موجود ہیں ۔50ہزار سے زائد افراد داؤی بوہرہ جماعت کی اجتماعات میں شرکت کے لیے آئے ہیں ۔ان افراد کی نقل و حرکت کے لیے بہتر ٹریفک پلان مرتب کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ میرا کام ٹریفک ریگولیٹر کا ہے لیکن اس کا ااسٹرکچر بنانا میرا کام نہیں ہے ۔ٹریفک انجینئرنگ سسٹم بنانا دیگر اداروں کی ذمہ داری ہے ۔اگر اس سسٹم کو ٹھیک نہیں کیا گیا تو شہر کے مسائل میں مزید اضافہ ہوگا ۔شہر کی ٹاؤن پلاننگ میں ٹریفک مینجمنٹ کو ترجیح دی جائے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر