قاتل بردران بھوڑے،بیوروکریٹ ان کی خاطر اپنا مستقبل تباہ نہ کریں:طاہر القادری

قاتل بردران بھوڑے،بیوروکریٹ ان کی خاطر اپنا مستقبل تباہ نہ کریں:طاہر القادری

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے کہا ہے کہ ہوم سیکرٹری پنجاب نے لاہور ہائیکورٹ کا جسٹس باقر نجفی کمیشن کی رپورٹ ورثاء کو دینے کاحکم نہ مان کر توہین عدالت کی۔23ستمبر کو توہین عدالت کی درخواست دائر کرینگے۔ بیورو کریٹس بھگوڑوں کیلئے اپنا کیریئر تباہ نہ کریں۔ قاتل برادران کا کوئی مستقبل نہیں۔ ہوم سیکرٹری آفس نے عدالتی حکم کی تصدیق شدہ کاپی وصول کرنے کے باوجود باقر نجفی کمیشن کی رپورٹ دینے سے انکار کیا جو کھلی توہین اورآئین و قانون کے ساتھ مذاق ہے ۔عدالتوں کے فیصلوں کا مذاق اڑانے والے شریف برادران اور ان کے حواریوں،درباریوں کو عدالتی فیصلوں کے احترام کا سبق سکھانا ہو گا۔پنجاب حکومت کی طرف سے عدالتی حکم نامہ کے خلاف اپیل میں جانے کا مطلب سانحہ ماڈل ٹاؤن کے یتیموں، مظلوموں اور انصاف کے منتظر ورثا کے خلاف اعلان جنگ ہو گا۔پنجاب کے حکمران کہتے ہیں کہ یہ رپورٹ ہم نے اپنے لیے بنوائی تو کیا یہ کوئی کھانے کی ڈش تھی جو انہوں نے اپنے لیے بنوائی؟17 جون 2014 ء کے دن انکوائری کمیشن مقرر کرتے وقت شہباز شریف نے یہ بات یہی تھی کہ یہ کمیشن میں اپنے لیے بنارہا ہوں؟آج نہیں تو کل رپورٹ پبلک ہو کر رہے گی ۔ حکمران جتنی تاخیر کریں گے ان کے حصے میں اتنی رسوائی آئے گی۔ وہ گزشتہ روز پاکستان عوامی تحریک کی سنٹرل کور کمیٹی کے ہنگامی اجلاس میں گفتگو کررہے تھے۔ دریں اثنا طاہر القادری نے الیکشن اصلاحات بل کی شق 203 کی منظوری پر شدید دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پارلیمنٹ پر جس کردار اور مزاج کے اکثریتی لوگ مسلط ہیں ان سے اسی قسم کی ماورائے آئین و اخلاق قانون سازی کی توقع کی جا سکتی ہے۔ شق کی منظوری ایمانداری اور اخلاقیات پر پارلیمانی حملہ ہے۔اس شق کی منظوری سے موجودہ نظام انتخاب کاحصہ عناصر کا اخلاقی و ذہنی دیوالیہ پن کھل کر سامنے آگیا۔انہوں نے کہا کہ ایک بے ایمان جھوٹا اور خائن قیادت کا اہل کیسے ہو سکتا ہے؟۔ جن اراکین پارلیمنٹ نے اس شق کی منظوری کے حق میں ووٹ دیا ہے وہ اللہ،عوام اور آئین کے مجرم ہیں۔

بھگوڑے

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر