زلفی بخاری نے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے وزراءخارجہ کے دورہ پاکستان سے متعلق تہلکہ خیز انکشاف کر دیا

زلفی بخاری نے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے وزراءخارجہ کے دورہ پاکستان ...
زلفی بخاری نے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے وزراءخارجہ کے دورہ پاکستان سے متعلق تہلکہ خیز انکشاف کر دیا

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )کچھ دن قبل میڈیا میں ایک خبر زیر گردش تھی کہ سعودی اور متحدہ عرب امارات کے وزراءخارجہ نے اپنے دورہ کے دوران حکومت پاکستان سے کہا کہ کشمیر کو مسلم امہ کا مسئلہ نہ بنایا جائے جس کی دفتر خارجہ کی جانب سے تردید کرتے ہوئے انہیں قیاس آرائیاں قرار دیا گیا لیکن اب معاون خصوصی زلفی بخاری نے اس سے معاملے پر اپنے بیان میں دوبارہ روشنی ڈال دی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے اوورسیز پاکستانی زلفی بخاری نے ” انڈیپنڈنٹ اردو “ کو دیئے گئے خصوصی انٹرویو دیا ، جب زلفی بخاری سے سوال کیا گیا کہ سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے وزرائے خارجہ کہہ چکے ہیں کہ کشمیر امہ کا مسئلہ نہیں تو اس پر وزیراعظم عمران خان نے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان سے کیا بات کی؟اس پر زلفی بخاری نے کہا کہ امہ والا بیان سعودی عرب نے نہیں متحدہ عرب امارات نے دیا تھا جبکہ سعودی ولی عہد نے یقین دہانی کرائی کہ اکتوبر میں اسلامی تعاون تنظیم کا اجلاس بلایا جائے گا تاکہ مسئلہ کشمیر کو مزید اجاگر کیا جاسکے۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کے دورہ سعودی عرب کا مقصد محمد بن سلمان کو کشمیر کے مسئلے کی حساسیت سے آگاہ کرنا تھا اور دونوں رہنماو¿ں کی ملاقات میں سعودی ولی عہد نے کہا کہ وہ مسئلہ کشمیر پر بھارتی وزیراعظم سے بات کریں گے۔زلفی بخاری نے کہا کہ بھارت کے سعودی عرب کے ساتھ مفاد جڑے ہیں، جس کے باعث کشمیر کے معاملے پر سعودی عرب اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔

مزید : اہم خبریں /قومی


loading...