فیصلہ ہوچکاہے کہ کیا ہوناہے؟ سینٹر مصدق ملک نے حکومتی رویے کو انتقامی قراردیدیا

فیصلہ ہوچکاہے کہ کیا ہوناہے؟ سینٹر مصدق ملک نے حکومتی رویے کو انتقامی ...
فیصلہ ہوچکاہے کہ کیا ہوناہے؟ سینٹر مصدق ملک نے حکومتی رویے کو انتقامی قراردیدیا

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)مسلم لیگ ن کے رہنما ڈاکٹر مصدق ملک نے کہاہے کہ احتساب نہیں انتقام کی سیاست ہورہی ہے ، فیصلہ ہوچکاہے کہ کیا ہونا ہے ؟ حکومت کی خام خیالی ہے کہ جیلوں میں ڈالنے سے ان کوحمایت مل جائیگی ۔

جیونیوز کے پروگرام ”کیپٹل ٹاک“میں گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر مصدق ملک نے کہا کہ ملک اس وقت بہت نازک وقت سے گزر رہا ہے تو حکومت کو چاہئے کہ سب کو ساتھ لیکر چلے ۔ انہوں نے کہا کہ ن لیگ میں تمام لوگ اپنی جگہ پر قائم ہیں ، حکومت این آر او کہتی ہے ہم این او کہتے ہیں ۔حکومت اقوام متحدہ میں کشمیر پر انسانی حقوق کی قرارداد لانے کیلئے 16ملکوں کوساتھ لیکر نہیں چل سکی ، حکومت نہ 16ملکوں کولیکر چل سکتی ہے اورنہ اپوزیشن کو لیکر چل سکتی ہے تو کیا یہ صرف تحریک انصاف کی حکومت ہے؟

انہوں نے کہا کہ حکومت کے رویئے سے بعض اوقات توایسا لگتاہے کہ پتہ نہیں کرنا کیاہے ؟انہوںنے کہا کہ ہر بندہ خوشی سے جیل جانا پسند نہیں کرتا ، نیب کا اور حکومت کا جورویہ ہے کہ لوگوں کواٹھا اٹھا کر جیلوں میں ڈال رہے ہیں ، اگر ڈالنا ہے تو جیل میں ڈال دیں۔ انہوں نے کہا کہ شاہدخاقان عباسی کیلئے ڈیڑھ سولوگوں پر دباﺅ ڈالا گیاہے کہ ان کے خلاف کوئی بیان مل جائے تاکہ ان کیخلاف ریفرنس دائر کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ احتساب نہیں انتقام کی سیاست ہورہی ہے ، فیصلہ ہوچکاہے کہ کیا ہونا ہے ؟ان کی خام خیالی ہے کہ جیلوں میں ڈالنے سے ان کوحمایت مل جائیگی ۔

مزید : قومی


loading...