سیاسی رہنما نے ہمارے گھر پر چڑھائی کی‘ امیر زادہ

سیاسی رہنما نے ہمارے گھر پر چڑھائی کی‘ امیر زادہ

  

چارسدہ (بیو رو رپورٹ) پڑانگ حسن خیل میں دو بے گناہ افراد کا قتل۔ منشیات فروشی اور سماج دشمن سرگرمیوں سے روکنے پر پی ٹی آئی کے رہنماء نے ہمارے گھر پر چڑھائی کی۔ پولیس بروقت کاروائی نہ کر تی تو بڑے پیمانے پر خون خرابہ ہو تا۔پولیس جرائم پیشہ عناصر کے خلاف کاروائی کریں بصورت دیگر قوم حسن خیل ان کے ٹھکانوں پر چڑھائی کرینگے۔ امیر زادہ کا خاندان کے مشران کے ہمراہ پریس کانفرنس۔ تفصیلات کے مطابق پڑانگ حسن خیل کے امیر زادہ عرف ڈاکٹر ولدا مین اللہ نے خاندان کے مشران کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کر تے ہوئے کہا کہ تین ستمبر کو عابد خان، وحید خان، عطاء اللہ عرف عطا گے نے دیگر مسلح افراد کے ہمراہ ہمارے گھر پر چڑھائی کی اور اندھا دھند فائرنگ کرکے ہمارے ایک ساتھی بدیع الزمان کو قتل کیا جبکہ مسلح افراد نے ہمارے گھر سے متصل دینی مدرسہ پر بھی فائرنگ کی جس کے نتیجے میں بچوں میں خوف و ہراس پھیل گیا۔۔اس دوران حملہ آوروں نے کیس کراس کرنے کیلئے اپنے ہی ڈرائیور اجمل کو بھی قتل کردیا اور ہم پر دعوے داری کر دی۔ انہوں نے کہا کہ گھر پر حملے کے حوالے سے انہوں نے تھانہ پڑانگ کو فون کیا جس پر پولیس جائے وقوعہ پر پہنچ گئی۔ امیر زادہ کا مزید کہنا تھا کہ حملے کی اصل وجہ علاقے میں منشیات فروشی ہے جس کے خلاف  حسن خیل قوم نے باقاعدہ جرگہ کیا تھا اور منشیات فروشوں کی بیخ کنی کا باقاعدہ فیصلہ ہو تھا۔ جرگہ فیصلے کے تناطر میں 26جولائی کووہ پی ٹی آئی کے رہنماء عابد خان کے پاس گئے اور ان کو بتایا کہ ان کے حجرے میں منشیات فروشی کا دھندہ ہو رہا ہے جس پر عابد خان نے کہا کہ وہ ایسے عناصر کو سمجھائینگے اور ان کو اپنے حجرے میں نہیں چھوڑینگے۔ چند روز بعد 4اگست کو عابد خان اور عطاء اللہ عر ف عطاگے نے ہمیں قتل کرنے کیلئے ایک اجرتی بھیجا جس کو رات کی تاریکی میں ہم نے اسلحہ سمیت پکڑا اور پڑانگ پولیس کے حوالے کیا اور اس کی باقاعدہ رپورٹ بھی موجود ہے۔ عابد خا ن کے حجرے میں ایک منظم جرائم پیشہ گروہ ہر وقت موجود رہتا ہے جو ان کی ایماء پر علاقے میں وارداتیں کر تے ہیں۔ عطاء اللہ عرف عطاگے کے خلاف تھانہ پڑانگ بھتہ خوری سمیت دیگر واقعات کے باقاعدہ ایف آئی آر موجود ہیں۔انہوں نے کہا پولیس کو مطلوب ملزم عطاء للہ عرف عطاگے اب بھی عابد خان کے حجرے میں موجود ہے۔ انہوں نے چارسدہ پولیس کے اعلی حکام سے اپیل کی کہ نوجوان نسل کے مستقبل کو تاریک کرنے والے جرائم پیشہ عناصر کے خلاف بھر پور کاروائی کریں بصورت دیگر حسن خیل قوم خود ان کے ٹھکانوں پر لشکر کشی کرینگے۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -