لوہامارکیٹ‘ ٹمبر مارکیٹ‘ جنرل بس  سٹینڈ‘ سبزی منڈی شہر سے باہر منتقل  کرنے کی منصوبہ بندی شروع

 لوہامارکیٹ‘ ٹمبر مارکیٹ‘ جنرل بس  سٹینڈ‘ سبزی منڈی شہر سے باہر منتقل  ...

  

 ملتان (خصو صی رپورٹر)غلہ منڈی،لوہا مارکیٹ،ٹمبر مارکیٹ،سبزی منڈی،جنرل بس اسٹینڈ اور ٹرک سٹینڈزکی(بقیہ نمبر48صفحہ 10پر)

 شہر سے باہر منتقل کرنے کی منصوبہ بندی شروع کردی گئی ہے۔اس سلسلہ میں منصوبے کی فزیبلٹی تیار کرنے کے لئے ڈپٹی کمشنر عامر خٹک کی زیر صدارت اجلاس منعقد ہوا۔اجلاس میں چئیرمین ملتان ڈویلپمنٹ اتھارٹی میاں جمیل احمد،ڈائریکٹر جنرل ایم ڈی اے آغا محمد علی عباس،ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو محمد طیب خان،اسسٹنٹ کمشنرز عابدہ فرید،آبگینے خان،چیف آفیسر اقبال فرید، چئیرمین مارکیٹ کمیٹی اکرم چاون اور سیکرٹری اعجاز سلیم بھی موجود تھے۔ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ ہیوی ٹریفک کے داخلے کاسبب بننے والی منڈیوں کو شہر سے باہر منتقل کیا جائے گا،منڈیوں اور اسٹینڈز کی ہیوی اور سست رفتار گاڑیوں نے شہرکا ٹریفک سسٹم یرغمال بنارکھا ہے،حکومت جامع پلاننگ کے ذریعے منصوبے پر عمل کرے گی۔ عامرخٹک نے کہا کہ حکومت تمام اسٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں لیکر آگے بڑھنا چاہتی ہے،وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے منصوبہ تیار کرنے کا حکم دے دیا ہے،حکومت مستقبل کی 50 سالہ ضروریات کو مدنظر رکھ کر جگہ کا تعین کرے گی۔اس موقع پر ڈپٹی کمشنر نے منصوبے پر پیش رفت کے لئے کمیٹی تشکیل دینے کا اعلان بھی کیا،اسسٹنٹ کمشنر سٹی کی سربراہی میں قائم کمیٹی میں چیف آفیسر،سیکرٹری مارکیٹ کمیٹی اور ایم ڈی اے کا آفسر شامل ہوگا۔انہوں نے کہا کہ کمیٹی منڈیوں اور اسٹینڈز کے نمائندوں سے نئی جگہ کے تعین بارے بات چیت کرے گی اور ایک ہفتے کے اندر اپنی رپورٹ پیش کرے گی۔چئیرمین ایم ڈی اے میاں جمیل احمدنے کہا کہ ملتان مستقبل میں صوبہ جنوبی پنجاب کا دارالحکومت بنے گا۔ شہر میں ٹریفک کا نظام بہتر بنانے کے لئے ابھی سے منصوبہ بندی کی ضرورت ہے،ڈی جی ایم ڈی اے آغا محمد علی عباس نے کہا کہ منڈیوں اور بس و ٹرک اسٹینڈ کی شہر سے باہر منتقلی ایم ڈی اے کے ماسٹر پلان میں شامل ہے اور انہیں وہاڑی روڈ اور دنیا پور روڈ پر شفٹ کیا جا سکتا ہے،سی او اقبال فرید نے کہا کہ موجودہ غلہ وسبزی منڈی،لوہا مارکیٹ اور ٹرک اسٹینڈز 700 کنال رقبہ پر محیط ہیں،منڈیوں کے قیام کے لئے وہاڑی روڈ،دنیا پور روڈ،شیر شاہ اور شجاع آباد روڈ پر وسیع اراضی دستیاب ہے۔

منصوبہ بندی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -