مریضوں کی نگہداشت طبی عملے کی ذمہ داری ہے، ہیلپ انٹرنیشنل

  مریضوں کی نگہداشت طبی عملے کی ذمہ داری ہے، ہیلپ انٹرنیشنل

  

کراچی (پ ر)مریضوں کی نگہداشت اور تحفظ ڈاکٹرز اور طبی عملے کی ذمہ داری ہے خصوصا ایسے مریض جو کہ مستقل موذی مرض کا شکار ہیں انہیں زیادہ نگہداشت اور توجہ کی ضرورت ہوتی ہے تھیلی سیمیا ایک ایسا مرض ہے جو کہ زندگی کے ساتھ ہی چلتا ہے اس لیے ڈاکٹرز طبی عملے اور تیمار دار تینوں کو ان مریضوں کا زیادہ خیال رکھنے کی ضرورت ہے یہ بات ہیلپ انٹر نیشنل ویلفیئر ٹرسٹ صدر عادل احمد خان نے ہیلپ تھیلی سیمیا کئیر سینٹر، گلستان جوہر میں مریضوں کے تحفظ کا عالمی دن کے موقع  ہیلپ والینٹرز پروگرام کے عہدیداران اور مریضوں کے والدین سے گفتگو کرتے ہوئے کہی، انہوں نے کہا کہ اس سال یہ دن اس لیے بھی بہت اہمیت کا حامل ہے کہ پوری دنیا ایک عالمی وبا کا شکار رہی ہے اس لیے پوری دنیا کے ڈاکٹر ز اور طبی عملہ ایک نئے تجربے سے گزرا ہے اوراب اس بات کی بھی شدت سے ضرورت محسوس ہورہی ہے کہ ڈاکٹر ز اور طبی عملے کا تحفظ کے لیے بھی پوری دنیا کے ماہرین صحت کو لائحہ عمل وضع کرنا ہوگا، اس موقع پر ہیلپ والینٹرز پروگرام کی صدر حفصہ صغیر نے کہا کہ طبی ماہرین کے مطابق دنیا بھر میں ہر سال نا مناسب دیکھ بھال کی وجہ سے 26 لاکھ مریض زندگی کی بازی ہار جاتے ہیں،مریض اور تیماردار طبی عملے سے تعاون کریں تو اس شرح کو کم کیا جا سکتا ہے مریضوں کے تحفظ کا عالمی دن کے انعقاد کا مقصدیہ ہے کہ ہم مرض سے نفرت کریں مریض سے نہیں اور دکھ اورتکلیف میں مبتلا ہرفرد ہماری مدد کا مستحق ہے اور ہم   بلا تعصب رنگ و نسل مذہب خدمت انسانیت پر یقین رکھتے ہیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -