ملکی ترقی کیلئے کسانوں کی خوشحالی یقینی بنانا ہوگی‘ حسین جہانیاں گردیزی 

    ملکی ترقی کیلئے کسانوں کی خوشحالی یقینی بنانا ہوگی‘ حسین جہانیاں گردیزی 

  

کبیروالا(نامہ نگار) عدلیہ اور ملکی سلامتی کے محافظ اداروں کیخلاف ہرزہ سرائی کرنا ملک دشمنوں کے ایجنڈے کو تقویت پہنچانا ہے،آل پارٹیز کانفرنس کے مقاصد کے حصول میں ناکام ”سیاستدانوں“ کوصبر کا مظاہرہ اور پرانی تنخواہ پر گزارہ کرنا ہوگا،ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر زراعت سید حسین جہانیاں گردیزی نے نواں شہر کبیروالا میں سید گروپ کے مرکزی رہنما سید عمران حیدر گردیزی کی جانب سے اپنے اعزاز میں دئیے گئے عشائیے سے خطاب کرتے ہوئے کیا(بقیہ نمبر28صفحہ 10پر)

۔انہوں نے کہا کہ ملکی ترقی اور معاشی استحکام کے لئے زرعی ترقی اور کسان کی خوشحالی کو یقینی بناناہوگا،کسانوں کوبھرپور فوائد کیلئے کاشتکاری میں جدید ٹیکنالوجی اپنانے کی طرف توجہ دیناہوگی۔ انہوں نے کہا کہ وزارت ملنا اللہ تعالیٰ کا فضل وکرم اورعوام کی محبتوں اور دعاؤں کا نتیجہ ہے،یہ منصب اور وزارتیں ان کے عوام کے درمیان کبھی فاصلے پیدا نہیں کرسکتے،عوام کی بلاامتیاز خدمت کرنے کا سلسلہ جاری رکھوں گا۔میزبان سید عمران حیدر گردیزی نے کہا کہ صوبائی وزیرزراعت سید حسین جہانیاں گردیزی نے ماضی میں تحصیل کبیروالا کی تعمیر وترقی کیلئے ریکارڈ ترقیاتی منصوبہ جات کو پایہ تکمیل تک پہنچاکر عوام سے ”محسن کبیروالا“لقب حاصل کیا،جو عوام سے محبت کرنے والے ہر سیاستدان کیلئے قابل ستائش عمل ہے۔عشائیہ تقریب میں سید گروپ کے مرکزی رہنماؤں،سید محمدحسنین شاہ،سید علی اکبر شاہ،سید طاہر عباس گردیزی،سید محمد خاور گردیزی‘سید حسین حیدر گردیزی،سید احسن رضا گردیزی،سردار اسلم حیات خان سیال،جاوید خان پڑھیار،طیب سلطان،حاجی محمد ارشد سنگا،مہر عمران محمود اُترا،مہر مشتاق احمد اسرا،مہر رب نواز باٹی،محمد اختر سہو،ریاست علی،مہر عرفان محمود اُترا،آصف مظہر سہو، راؤ آصف علی سعیدی، خالد عباس سپرا، صفدر حسین سیال،رانامختیار سکھیرا،  چوہدری عبدالمالک سہو،عابد خان پنیاں، محمد حیات مرالی،چوہدری فاروق کرنالی اکبر عباس،شیخ محمد ارشد،ملک یوسف بھٹی،ملک حق نواز لپرا اور دیگر سیاسی وسماجی شخصیات نے شرکت کی۔ دریں اثناء زرعی منصوبہ جات کے اہداف کا مقررہ مدت میں حصول اور اس کے ثمرات کاشتکاروں تک پہنچنا ضروری ہیں۔ یہ بات وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی نے لاہور میں ایک اعلیٰ سطحی اجلاس کی صدارت کے دوران کہی۔ وزیر زراعت پنجاب نے مزید کہا کہ مالی سال 2020-21 میں 7 ارب 75 کروڑ روپے کی لاگت سے 5 نئے اور 39 جاری ترقیاتی منصوبوں کی تکمیل سے اہم فصلوں کی فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ ممکن ہوگا۔ اس کے علاوہ وزیراعظم کے زرعی ایمرجنسی پروگرام کے تحت 300 ارب روپے کے مختلف ترقیاتی منصوبوں پر بھی عمل درآمد جاری ہے جس سے گندم کی پیداوار میں 7 من فی ایکڑ، دھان کی باسمتی اور موٹی اقسام کی پیداوار میں بالترتیب 10 من اور 20 من فی ایکڑ کے اضافہ کے علاوہ گنے کی پیداوار میں 200 من فی ایکڑ کا اضافہ ہوگا۔  وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی نے وزیر اعظم کے زرعی ایمرجنسی پروگرام کے تحت جاری منصوبوں پر عمل درآمد تیز کرنے اور اہداف کی تکمیل کی ہدایت کی تاکہ کاشتکاروں کی پیداوار ی لاگت میں کمی اور آمدن میں اضافہ یقینی بنایا جاسکے۔ انھوں نے کہا کہ کاشتکاروں کو زیادہ پیداواری صلاحیت رکھنے والی جدید ٹیکنالوجی کی حامل فصلوں کی نئی اقسام کی فراہمی ہمارا اولین فریضہ ہے تاکہ فی ایکڑزیادہ زرعی پیداوار میں اضافہ کے ساتھ کم پیداواری لاگت آئے جس سے کاشتکار زیادہ منافع حاصل کر سکیں گے۔ وزیر زراعت پنجاب نے دستیاب پانی کے باکفایت اور بہتر استعمال کی ضرورت پر زور دیا اور ”مارکیٹنگ کواپریٹوز“کی طرز پر اہداف کے حصول میں پیش رفت پر زور دیا۔ وزیر زراعت پنجاب حسین جہانیاں گردیزی نے پنجاب میں  ”ہائی ویلیو کراپس“ کی پیداوار اور ایکسپورٹ میں اضافے کے لیے ہر ممکن وسائل بروئے کار لانے کی ہدایت کی ہے۔

حسین جہانیاں 

مزید :

ملتان صفحہ آخر -